دو ماہ میں 255 ملین روپے سے زائد جائیداد ٹیکس وصول کیا گیا۔ مکیش کمار چالہ


کراچی(صباح نیوز)جائیداد ٹیکس کی وصولی کے سلسلے میں صوبائی وزیر برائے ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن و انسداد منشیات مکیش کمار چالہ کی زیر صدارت ایک اجلاس منعقد ہوا۔

اجلاس میں سیکریٹری ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن و انسداد منشیات راجہ خرم شہزاد، ڈائریکٹر جنرلز منیر احمد زرداری، حاجی سلیم بھٹو ، ڈائریکٹر ٹیکسز ثمینہ بھٹو اور دیگر افسران بھی شریک ہوئے۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ جولائی 2021 سے اگست تک مجموعی طور پر 255.216 ملین روپے جائیداد ٹیکس وصول کیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق کراچی سے 231.305 ملین روپے اور حیدرآباد سے 12.978 ملین روپے جائیداد ٹیکس وصول کیا گیا جبکہ سکھر سے 5.241 ملین روپے اور شہید بینظیر آباد سے 1.425 ملین روپے اور لاڑکانہ سے 1.838 ملین روپے اور میرپور خاص سے 1.429 ملین روپے ٹیکس وصول کیا گیا۔

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر برائے ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن و انسداد منشیات اور پارلیمانی آمور و خوراک مکیش کمار چالہ نے کہا کہ جائیداد ٹیکس نادہندہ گان سے درخواست کی کہ وہ کسی بھی ناخوشگوار صورتحال میں بچنے کے لئے فوری طور پر اپنے ٹیکسز جمع کروائیں جبکہ 30 ستمبر تک جائیداد ٹیکس جمع کروانے والوں کو پانچ فیصد ٹیکس ریلیف دیا جائے گا۔

انہوں نے مزید کہا کہ جائیداد ٹیکس کے لئے کمپیوٹرائزڈ چالان جاری کردئیے گئے ہیں۔چالان نہ ملنے کی صورت میں متعلقہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن کے دفتر سے رابط کریں۔ انہوں نے کہا کہ جائیداد ٹیکس کی وصولی کے لئے خصوصی ٹیمیں تشکیل جائیں اور افسران جائیداد ٹیکس کی وصولی کے لئے جامع منصوبہ بندی کریں۔