شہزاد رائے نے سرِعام پھانسی کی مخالفت کردی


اسلام آباد:پاکستان میوزک انڈسٹری کے معروف گلوکار و سماجی کارکن شہزاد رائے نے زیادتی کیسز میں ملوث ملزمان کی سرِعام پھانسی کی مخالفت کردی ہے۔

مائیکرو بلاگنگ سائٹ ٹوئٹر پر ٹوئٹ کرتے ہوئے شہزاد رائے نے لکھا کہ میں نے بچوں کو جنسی استحصال سے بچانے کے لیے بہت کام کیا ہے اور میں چاہتا ہوں کہ عورتوں اورچھوٹے بچوں کے ساتھ عصمت دردی کرنے والے وحشی دردندوں کو قانون کی پوری طاقت سے سزا دی جائے۔شہزاد رائے نے سرِعام پھانسی کی مخالفت کرتے ہوئے لکھا کہ میں زیادتی کیسز میں ملوث ملزمان کو عوامی طور پر سرِعام پھانسی دینے کے خلاف ہوں۔

مزید پڑھیں: زیادتی کیسز میں ملوث ملزمان کو پھانسی دینا مسئلے کا حل نہیں ہے، شنیرا اکرم

انہوں نے عوام سے سوال کرتے ہوئے لکھا کہ کیا آپ چاہتے ہیں کہ ہمارے چھوٹے بچے چوکوں، چوراہوں، سڑکوں اور بازاروں میں لٹکی لاشیں دیکھیں؟گلوکار نے اپنے ایک اور ٹوئٹ میں لکھا کہ جو لوگ مجرمان کی سرِعام پھانسی کا مطالبہ کر رہے ہیں ان کو یہ نہیں بھولنا چاہیے کہ تشدد ہی تشدد کو جنم دیتا ہے اور اِس پر ہمارے پاس بہت سی تحقیقاتی رپورٹس بھی موجود ہیں۔