لڑکی لڑکا تشدد کیس ،چار ملزمان تین روز کیلئے جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے


اسلام آباد (صباح نیوز)جوڈیشل مجسٹریٹ اسلام آباد وقار گوندل نے اسلام آباد لڑکی اور لڑکے کو تشدد کانشا نہ بنانے اور انہیں بلیک میل کرنے کے کیس میں گرفتار مرکزی ملزم عثمان مرزا سمیت چار ملزمان کو مزید تین روزہ جسمانی ریمانڈ پو لیس کے حوالہ کر دیا۔

عدالت نے ملزمان  کے وکلاء کی جانب سے ان کے مئوکلین کو  جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیجنے یا رہا کرنے کی استدعا مسترد کردی گئی۔  عدالت نے ملزمان کو تفتیش میں ہونے والی پیش رفت رپورٹ کے ہمراہ دوبارہ20جولائی کو عدالت میں پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔

پولیس نے تمام ملزمان کو جسمانی ریمانڈ ختم ہونے پر جوڈیشل مجسٹریٹ وقار گوندل کی عدالت میں پیش کیا۔ دوران سماعت پولیس کے تفتیشی افسر نے عدالت کو بتایا کہ ملزمان کی آڈیو اور ویڈیو ریکارڈنگز کے فارنزک کے لئے رپورٹ بھجواد ی گئی   اور ابھی ٹیسٹنگ ہو رہی ہے اور رپورٹ موصول نہیں ہوئی لہذا ملزمان کا مزید جسمانی ریمانڈ دیا جائے ، ملزمان سے ابھی مزید تفتیش کرنی ہے۔

ملزمان کے  وکلاء نے  دوران سماعت اپنے مئوکلین کو ضمانت پر رہا کرنے یا جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھجوانے کی استدعا کی تاہم عدالت نے ملزمان کے وکلاء کی استدعا مسترد کرتے ہوئے ملزمان کو تین روزہ  جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالہ کردیا ہے۔

دوران سماعت مرکزی ملزم عثمان مرزا نے بتایا کہ جس روز یہ واقعہ ہوا اسی روز ان کی معافی تلافی ہو گئی تھی اور راضی نامہ ہو گیا تھا تاہم جب پولیس نے واقعہ کا نوٹس لیا تو اس کے بعد متاثرہ فریق نے دوبارہ ملزمان کے خلاف درخواست دے دی ۔

اس پر عدالت نے قراردیا کہ پہلے کیس کی تفتیش مکمل ہو گی اس کے بعد میرٹ پر کیس کو دیکھا جائے گا، لہذا ابھی پولیس تفتیش کررہی ہے اور جب پولیس تفتیش مکمل نہیں کرتی اس وقت تک کوئی فیصلہ نہیں کیا جاسکتا۔

عدالت نے چاروں ملزمان کو تین روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کرتے ہوئے انہیں دوبارہ تفتیش میں ہونے والی پیش رفت رپورٹ کے ہمراہ 20جولائی کو پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔