سندھ حکومت کا وفاق سے پیاز کی بر آمد پر پابندی ختم کرنے کا مطالبہ


کراچی: سندھ حکومت نے وفاق سے پیاز کی بیرون ملک بر آمد پر پابندی ختم کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ وفاق پیاز کی برآمد پر پابندی ختم کرے اور درآمد پر عارضی پابندی لگائے۔

صوبائی وزیر زراعت محمد اسماعیل راہو نے مزید کہا کہ سب سے زیادہ پیاز کی پیداوار سندھ میں ہے،وفاق ایکسپورٹ سے فورن پابندی ہٹائیاورامپورٹ پر لگائے،سندھ میں اس سال بمپر کراپ متوقع ہے،سندھ میں 56 ھزار ہیکڑرز پر پیاز کاشت کی گئی۔صوبائی وزیر نے کہا کہ اس سال سندھ میں 7 لاکھ 60 ھزار ٹن پیاز کی پیداوار متوقع ہے، صوبے کی کھپت 5 لاکھ 63 ھزار ٹن ہے، سندھ میں ایک لاکھ 97 ہزار ٹن پیاز کھپت سے زیادہ پیدا ہوگا، پورے ملک میں ایک لاکھ 51 ہزار 636 ہیکٹرز پر پیاز کی فصل لگی ہے.

اسماعیل راہو نے کہا کہ رواں سیزن میں ملک میں 21لاکھ 12ھزار 894 ٹن پیداوار متوقع ہے، وفاق کی غلط پالیسیوں کے باعث ملکی زرعی معیشت تباہی کے دہانے پہ ہے، وفاق ہمیشہ الٹے کام کرتا ہے،جب ایکسپورٹ کرنے کی ضرورت ہوتی ہے تو امپورٹ کرتا ہے ،جب درآمد کرنے کی ضرورت تھی تو خاموش تماشادیکھتا رہا.

وزیرزراعت نے کہا کہ وفاق ایران اور افغانستان سے پیاز منگوا رہا ہے باقی ایکسپورٹ سے پابندی نہیں ہٹارہا،پیاز امپورٹ ہونیکی وجہ سے ملکی کاشتکاروںکو بھاری نقصان پہنچ رہا ہے،آلو ایکسپورٹ ہورہا ہے تو پیاز پر پابندی کیوں؟۔