بھارت کی آبی جارحیت،دریائے جہلم کا پانی روکنا شروع کر دیا


چناری:بھارت نے سندھ طاس معاہدے کی خلاف ورزی کرتے ہوئے مقبوضہ کشمیر سے آزاد کشمیر آنے والے دریائے جہلم کا پانی روکنا شروع کر دیا بھارت کی آبی جارحیت کے باعث مقبوضہ کشمیر سے لائن آف کنٹرول چکوٹھی اوڑی کے راستے آزاد کشمیر میں داخل ہونے والادریائے جہلم ایک نالے کا منظر پیش کرنے لگا۔

تفصیلات کے مطابق بھارتی آبی جارحیت کے باعث دریائے جہلم میں پانی کی سطح کم ترین سطح پر پہنچ گئی ماضی میں بھی بھارت دریائے جہلم کاپانی روکنے جیسے اقدام کر چکا ہے بھارتی آبی جارحیت کے باعث دریا جہلم کے کنارے آزاد کشمیر میں بسنے والے انسانوں کے ساتھ ساتھ آبی حیات کی زندگیوں کو بھی شدید خطرات لاحق ہیں اس سے قبل شدید خشک سالی کے باعث موسم سرما میں دریائے جہلم میں پانی کی سطح انتہائی کم ہو جاتی تھی

لیکن رواں سال موسم سرما کے شروع ہوتے ہی میدانی علاقوں میں بارشوں اور پہاڑوں پر برف باری کا سلسلہ شروع ہوا جس سے خشک سالی سے پیدا ہونے والی پانی کی کمی پوری ہو گئی لیکن بھارت نے آبی جارحیت کرتے ہوئے دریائے جہلم کا پانی روکنا شروع کر رکھا ہے مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ بین الاقوامی برادری کو بھارت کی جانب سے دریائے جہلم کا پانی روکنے اور سندھ طاس معائدے کی خلاف ورزی پر فوری طور پر نوٹس لینا چاہیے۔