موجودہ حالات میں شرح سود کو 5فیصد پرمنجمد کیا جائے،آل پاکستان انجمن تاجران


لاہور/کراچی:آل پاکستان انجمن تاجران کے مرکزی صدر اشرف بھٹی نے کہا ہے کہ کورونا وباء کی پہلے لہر کے آفٹر شاکس ابھی تک محسوس کئے جارہے ہیں اور دوسری لہر شروع ہو گئی ہے ،ایسے حالات میں شرح سود کو کم از کم 5فیصد پر لایا کر منجمد کیا جائے ، بینکوں سے قرض لینے میں جتنی آسانیاں پیدا کی جائیں گی اتنا زیادہ سرمایہ گردش میں آئے گا جس سے معاشی سر گرمیاں عروج حاصل کریں گی ،حکومتی پالیسیاں ٹیکس نیٹ بڑھانے میں رکاوٹ ہیں۔

ان خیالات کا اظہارانہوں نے اپنے دفتر میں منعقدہ ماہانہ جائزہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اجلاس میں مرکزی سیکرٹری جنرل محبوب سرکی ،لاہور کے صدر میاں طارق فیروز، سینئر نائب صدر نعیم بادشاہ،شہزاد بھٹی، رفعت سلیم ، خواجہ ندیم سمیت مختلف مارکیٹوں کے عہدیدار موجود تھے۔اجلاس میں کراچی تنظیم کے عہدیداروں سے بھی ٹیلیفونک مشاورت کی گئی ۔

اشرف بھٹی نے کہا کہ ٹیکس رجیم معاملات پر بزنس کمیونٹی سے بامعنی مذاکرات ہونے چاہئیں اور ابہام دور ہونا چاہیے ،حالات کی وجہ سے کاروباری برادری پہلے ہی مشکلات سے دوچار ہے جبکہ حکومتی اداروں کے بہت سے معاملات کی وجہ سے تاجر تذبذب اور پریشانی کا شکار ہیں ،حکومت کاروبار دوست ماحول پیدا کرے اور کوئی بھی فیصلہ یا پالیسی لاگو کرنے سے قبل اسٹیک ہولڈرز کی مشاورت کو یقینی بنایا جائے اور بہتر راستہ تلاش کیا جائے۔ مسائل کے حل کے لئے تاجر تنظیموں کا فوکل پرسنزکی تعیناتی کا دیرینہ مطالبہ بھی پورا کیا جائے۔