منشیات برآمدگی کیس ، رانا ثنااللہ پر فرد جرم عائد نہ ہوسکی


لاہور:منشیات برآمدگی کیس میں مسلم لیگ (ن) پنجاب کے صدر رانا ثنااللہ پر فرد جرم عائد نہ ہوسکی۔ہفتہ کولاہور کی انسداد منشیات کی خصوصی عدالت کے جج شاکر حسن نے منشیات برآمدگی کیس کی سماعت کی۔ رانا ثنااللہ عدالت میں پیش ہوئے اور حاضری مکمل کرائی۔

فرہاد علی شاہ ایڈووکیٹ نے موقف اپنایا کہ پنجاب بار کونسل کے انتخابات کے باعث اعظم نذیر تارڑ مصروف ہیں۔ عدالت نے فرہاد علی شاہ سے مکالمہ کیا کہ آپ کا وکالت نامہ بھی ہے اور آپ بھی سینئر وکیل ہیں، بحث کریں۔ جس پر وکیل نے موقف اپنایا کہ اعظم نذیر تارڑ کی اجازت کے بغیر فرد جرم کی کارروائی پر دلائل نہیں دے سکتا۔

مزید پڑھیں: عوام حکومتی کورونا کے خلاف باہر نکلیں، رانا ثنا اللہ

اے این ایف نے پچاس سے زائد لوگوں کے بیانات قلمبند کئے لیکن ان کی کاپیاں فراہم نہیں کی گئیں۔ اعظم نذیر تارڑ کی عدم موجودگی کے باعث رانا ثنااللہ پر فرد جرم عائد نہ ہوسکی۔ خصوصی عدالت کے جج شاکر حسن نے سماعت 5 دسمبر تک ملتوی کرتے ہوئے فرد جرم عائد کرنے کیلئے بحث کا حکم دے دیا۔