مقبوضہ کشمیر کی ڈیموگرافی کی تبدیلی کے لئے بھارتی اقدامات پر تشویش ہے،علی علی زادہ


اسلام آباد:پاکستان میں مقیم آذربائیجان کے سفیرعلی علی زادہ نے مقبوضہ کشمیر کی ڈیموگرافی کی تبدیلی کے لئے بھارتی اقدامات پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ آذربائیجان کی حکومت اور عوام کشمیریوں کے حق خودارادیت میں ان کے ساتھ ہیں۔

مزید پڑھیں:بھارت بھارتی ہندوؤں کو کشمیر میں بسا کرعالمی قوانین کی خلاف ورزی کر رہا ہے:عبدالرشید ترابی

آذربائیجان کے سفیر نے ان خیالات کا اظہار پبلک اکاؤنٹس کمیٹی آزادکشمیر کے چیئرمین عبدالرشید ترابی سے ملاقات میں بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ آذربائیجان کے سفیر کے ساتھ ملاقات میں معاون خارجہ امور جماعت اسلامی آزادکشمیر خالد محمود بھی موجود تھے۔ عبدالرشید ترابی نے آرمینیا کے ساتھ لڑائی میں آذربائیجان کی فتح پر انہیں مبارکباد پیش کی اور انہیں بتایا کہ آذربائیجان کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لئے آزادکشمیر قانون ساز اسمبلی نے قرارداد منظور کی تھی۔

عبدالرشید ترابی کی اس قرارداد میں اہل کشمیر کی طرف سے آذربائیجان کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کیا گیا تھا۔ عبدالرشید ترابی نے بتایا کہ اہل کشمیر کو خوشی ہے کہ برادر اسلامی ملک آذربائیجان کو آرمینیا کے مقابلے میں کامیابی حاصل ہوئی ہے۔ اہل کشمیر آذربائیجان کے شکرگزار ہیں کہ اس نے ہمیشہ او آئی سی کے پلیٹ فارم سے کشمیری عوام کے حق خودارادیت کی حمایت کی۔

عبدالرشید ترابی نے بھارت کی انتہاپسند حکومت کے مقبوضہ کشمیر میں اقدامات بالخصوص ڈیموگرافی کی تبدیلی کے منصوبوں سے آگاہ کیا۔ لائن آف کنٹرول پر نہتے شہریوں کے قتل عام، مقبوضہ کشمیر کے اندر انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کی صورتحال سے آگاہ کیا۔انہوں نے کہا کہ اہل کشمیر بین الاقوامی برادری بالخصوص او آئی سی سے توقع رکھتے ہیں کہ وہ کشمیر کاز کے لئے کردار ادا کرے گی۔ کشمیریوں کے حق خودارادیت کے لئے آواز بلند کی جائے گی۔

آذربائیجان کے سفیر نے کہا کہ ان کے ملک کو مقبوضہ کشمیر کی جیوگرافی تبدیلی کے منصوبوں پر تشویش ہے۔ کشمیری عوام اور اہل پاکستان نے آذربائیجان کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کیا ہے اس پر ہم ان کے شکرگزار ہیں۔ آذربائیجان کی فتح کے بعد خوشی کے اظہار میں جشن منایا جا رہا ہے۔ سرحدی علاقوں میں بھی پروگرام ہو رہے ہیں ان پروگراموں میں پاکستان اور ترکی کے جھنڈے بھی لہرائے جا رہے ہیں۔ یہ اقدام اس بات کا ثبوت ہے کہ آذربائیجان کے عوام اپنے برادر اسلامی ممالک کی یکجہتی اور ہمدردی پر ان کے شکرگزار ہیں۔