لکڑی کے کشیدہ کار محمد وسیم کو صدرمملکت نےکارکردگی ایوارڈ دیدیا


اسلام آباد:مغلیہ دور سے لکڑی پر انتہائی خوبصورت اور دیدہ زیب رنگوں سے نقش و نگار  بنانے کے پیشے سے وابستہ خاندان کے چشم و چراغ محمد وسیم کو صدر ڈاکٹر عارف علوی نے کارکردگی ایوارڈ سے نواز دیا۔

محمد وسیم کا تعلق خیبرپختونخوا کے جنوبی ضلع ڈیرہ اسماعیل خان سے ہے ، مقامی زبان میں ان کے فن کو لیکر کہا جاتا ہے۔ وسیم نے اسلام آباد میں منعقدہ لوک میلے میں اسٹال لگایا تھا ۔

سینکڑوں سال سے محمد وسیم  کا خاندان اس فن سے وابستہ ہے اور ان کے بزرگوں نے مغلیہ دور میں  اس کام کا آغاز کیا اور ان کے ہاتھ کی بنائی ہوئی مصنوعات مغل بادشاہوں کے محلات کی زینت بھی بنی۔ انتہائی چمکدار رنگوں کے ساتھ لکڑی پر یہ خاندان  پھول اور دیگر دیدہ زیب اشیاء پر انتہائی مہارت سے لکڑی  پر نقش و نگار کندہ کرتا ہے۔

ملک کا کوئی ایسا میلہ نہیں ہے جہاں وسیم کا اسٹال نہ لگا ہو۔ لوک ورثہ میلہ میں بھی  یہ ہنر مند موجود تھا، انتہائی پذیرائی ملی۔ صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی نے محمد وسیم کو کارکردگی ایوارڈ سے نوازا ہے۔