تُرک بہن/بھائیو تم اکیلے نہیں

تحریر:محمد عبدالشکور
صدر الخدمت فاؤنڈیشن پاکستان


یکم نومبر کو ترکی کے شہر ازمیر میں زلزلے کے شدید جھٹکے آئے۔ دو درجن سے زائد بچے بُوڑھے شہید ہوئے۔ سینکڑوں شدید زخمی ہوئے اور بہت ساری بلند و بالا عمارتیں زمیں بوس ہو گئیں ۔

تُرکی کی حکومت نے البتہ کسی سے مدد کی اپیل نہ کی۔ اُن کا خیال تھا/ ہے کہ وہ اس آفت کو آسانی سے خود سنبھال سکتے ہیں۔ انہوں نے سوچ سمجھ کرکسی کو آواز دینے کی زحمت نہ کی۔

ہاں البتہ پاکستان پر جب بھی کو ئی ناگہانی آفت آئی، ہمیں مشکلات نے آن گھیرا، تُرک حکومت اور این جی اوز کسی پُکار کا انتظار کئے بغیر ہمیشہ ہماری داد رسی کے لئے آجاتی رہیں ۔

تو الخدمت بھلا کیوں “آوازے” کا انتظار کرتی ۔ ہم نے سوچا اور پھر،الخدمت فاؤنڈیش کے سابق صدر اور الخدمت ہیلتھ کے چیئرمین ڈاکٹر حفیظ الرحمان اپنی ٹیم کے ہمراہ ازمیر پہنچ گئے۔ ہم چاہتے تھے اپنے ترک بہن/ بھائیوں کو یہ احساس دلا سکیں کہ مشکل کی ان گھڑیوں میں وہ
“ ہرکِز اکیلے نہیں”
دُکھ کے ان لمحات میں پاکستانی قوم اور الخدمت اُن کے ساتھ کھڑی ہے۔
“سانجھی اپنی خوشیاں اور غم ایک ہیں ،ہم ایک ہیں”