فلپائن میں پولیس افسرکا قاتل مرغا گرفتار


منیلا :فلپائن میں چھاپہ مارنے والے پولیس افسر کو لڑاکا مرغے نے حملہ کر کے ہلاک کر دیا۔

غیر ملکی خبر رساں ا دارے کے مطابق فلپائن کی شمالی علاقے ثمر میں مرغوں کی غیر قانونی لڑائی میں چھاپہ مارنے والے پولیس افسر پر ایک لڑاکا مرغے نے حملہ کر دیا جس کے باعث مرغے کے پنجے میں لگے تیز دھار بلیڈ سے پولیس افسر کی شریان کٹ گئی۔پولیس افسر کو فوری طور پر ہسپتا ل منتقل کیا گیا لیکن زیادہ خون بہہ جانے کے باعث پولیس افسر کی موت واقع ہو چکی تھی۔

مرغے کے پنجے پر لگے بلیڈ سے مرنے والے لیفٹیننٹ بولوک سین جوس ٹائون کے پولیس چیف تھے۔مرغے کے بلیڈ نے پولیس افسر کی بائیں ران کو زخمی کیا تھا۔ واضح رہے کہ کرونا کے پیش نظر مقامی حکومت نے مرغوں کی لڑائی پر پابندی عائد کی ہوئی ہے تاکہ مجمع کے جمع ہونے سے بچا جا سکے جو کورونا کے پھیلا کا سبب بن سکتا ہے۔

پولیس افسر کرنل آرنل اپود کا کہنا تھا کہ جب اس واقعے سے متعلق مجھے معلوم ہوا تو یقین نہیں آیا کیونکہ یہ میرے 25سالہ پولیس کیریئر کا پہلا واقعہ ہے جب مرغوں کی لڑائی کی وجہ سے ایک پولیس افسر ہلاک ہو گیا۔چھاپے کے دوران مرغوں کی لڑائی کرانے والے تین ملزمان کو گرفتار کیا گیا جبکہ بلیڈ لگے دو مرغے بھی قبضے میں لے لیے گئے۔

خیال رہے کہ فلپائن میں مرغوں کی لڑائی کے دوران ان کے پنجوں سے تیز دھار بلیڈ باندھے جاتے ہیں تاکہ یہ اپنے مخالف مرغے کے لیے زیادہ خطرناک ثابت ہوں اور یہ لڑائی ایک مرغے کے مرنے پر ہی ختم ہوتی ہے۔فلپائن میں مرغوں کی لڑائی بہت مقبول مشغلہ ہے اور عمومی طور پر ان لڑائیوں میں عوام کی بڑی تعداد شریک ہوتی ہے اور مرغوں کی جیت پر بھاری شرطیں لگائی جاتی ہیں۔