یورپ بھر میں کشمیریوں نے کشمیر پر بھارتی قبضے کے خلاف یوم سیاہ منایا ۔ محمد غالب


برمنگھم: تحریک کشمیر یورپ کے صدر محمد غالب نے کہا ہے کہ یورپ بھر میں کشمیریوں نے کشمیر پر بھارتی قبضے کے خلاف یوم سیاہ منایا ۔ اس موقع پر آزادی  ، جمہوریت اور انسانیت پسند عوام  نے  جوش و جذبے کے ساتھ کشمیریوں کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کیا ۔ دنیا کے کونے کونے سے سے کشمیریوں کے حق میں آواز بلند ہوئی ہے۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے  محمد غالب نے کہا کہ  بھارت کے لیے  ایک ہی پیغام   ہے کہ وہ اپنی دہشتگرد درندہ صفت فوج کو کشمیر سے نکال لے ۔ کشمیریوں کے ساتھ کیے گے وعدے اور عالمی معائدوں پر عمل درآمد  کیا جائے ۔کشمیری بھارتی  غلامی کو قبول کرنے کے لیے تیار نہیں ہیں ۔ہر قیمت پر آزادی کی جنگ کو جارہی رکھنے کے لیے پُرعزم ہیں، کشمیر کی تقسیم اور بھارتی سازشوں  کو ہر محاذ پر بے نقاب کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ یورپ میں موسم سرما شررع  ہو گیا ہے۔ کرونا وائیرس کی وبا میں اضافہ ہوتا جارہا ہے جس کے نتیجے میں مختلف ممالک میں  یوم سیاہ  کے  احتجاجی مظاہرے اور کانفرنسیں بڑے عوام اجتماعات اور پرگراموں کو کو ملتوی کرنا پڑا  کشمیر دیجیٹل کمپین اور جدید  طریقوں کو استعمال کے کے آن لائن زوم سے  مظاہرے کشمیریوں پر ڈھائے جانے والے انسانیت سوز مظالم کشمیریوں کے حق خودارادیت کو اجاگر کیا  گیا۔ دنیا  کو یہ پیغام دیا گیا کہ  مودی جیسے دہشتگرد انسانیت کے دشمن کو  کو لگام نہ دیا گیا تو  نہ صرف خطے بلکہ دنیا کے امن کو شدید خطرہ ہے۔

محمد غالب نے کہا کہ بھارت نے کشمیریوں کا قتل  نسل کشی کر رہا ہے کشمیریوں کی دو نسلیں آزادی کی جدو جہد میں قرنان ہوچکی ہیں۔ اب بھارت نے آخری حربے  میںکشمیر میں آبادی کے تناسب کو تبدیل کرنے  کی کوشش کی ہے ۔