برطانوی حکومت کشمیر کو تباہ کن ایٹمی جنگ سے بچائے، مسعود خان


برمنگھم : صدر آزاد جموں و کشمیر سردار مسعود خان نے برطا نوی پارلیمنٹ، حکومت، اور سول سوسائٹی سے اپیل کی ہے کہ  وہ ہندو آبادی کو جموں و کشمیر منتقل کرنے کے جاری شیطانی چکر کو ختم کرنے کے لئے اپنا کردار ادا کرے  ۔ یہ جنگی جرم اور انسانیت کے خلاف جرم ہے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز تحریک کشمیر برطانیہ کے زیر اہتمام برطانیہ میں ویڈیو لنک کے ذریعے کشمیر ڈیجیٹل مہم اور احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ تحریک کشمیر برطانیہ نے بھارتی قونصل خانے برمنگھم اور انڈین ہائی کمیشن لندن کے باہر کشمیر ڈیجیٹل مہم کا آغاز کیا۔

مظاہرین نے کشمیر پر بھارتی ناجائز قبضے کے خلاف نعرے بازی کی اور بھارتی قونصل خانے برمنگھم کے باہر پلے کارڈز اٹھا کر احتجاجی مظاہرہ کیا۔ویڈیو لنک کے ذریعے اپنے خطاب کے دوران، صدر ریاست آزاد جموں و کشمیر سردار مسعود خان نے تحریک آزادی کشمیر اور ستائیس اکتوبر کو یوم سیاہ کے موقع پر برطانیہ میں ریلیوں کے انعقاد کے لئے صدر تحریک کشمیر برطانیہ فہیم کیانی کی کاوشوں کی تعریف کی اور سراہا۔

صدر ریاست آزاد جموں و کشمیر کا مزید کہنا تھاکہ ہم برطانیہ کی پارلیمنٹ، حکومت، اور سول سوسائٹی سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ ہندو آبادی کو جموں و کشمیر منتقل کرنے کے جاری شیطانی چکر کو ختم کرنے کے لئے اپنا کردار ادا کریںیہ جنگی جرم اور انسانیت کے خلاف جرم ہے۔ کشمیری اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق اپنے حقوق کی بحالی کے لئے اس قسم کے عالمی مداخلت کا انتظار کر رہے ہیں۔

صدر ریاست آزاد جموں و کشمیر نے برطانوی حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ آگے بڑھے اور کشمیر کو تباہ کن ایٹمی جنگ سے بچائے، کشمیریوں کو مارنے والی بھارت کو بندوقیں نہ بھیجے، کشمیریوں کی بیحرمتی اور ان کے حق تلفی کا سبب بننے والے ہندوستان کو سرمایہ نہ دے۔ جب کہ کشمیریوں نے اپنی آزادی اور خود ارادیت حاصل کرنے تک جدوجہد جاری رکھنے کا عزم کیا ہے۔

اس موقع پر صدر جموں وکشمیر سالویشن موومنٹ الطاف احمد بٹ نے احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کشمیریوں نے بھارت کے غاصبانہ قبضے کیخلاف جدوجہد کرتے ہوئے قربانیوں کی لازوال داستان رقم کی ہے لاکھوں کشمیری آزادی کی اس تحریک میں شہید ہوئے لاکھوں اپنے گھروں سے ہجرت پر مجبور ہوئے آج بھی حریت قیادت جیلوں میں نظر بند ہے۔عوام بھارت کے غاصبانہ قبضے کیخلاف اپنی جدوجہد منزل کے حصول تک جاری رکھیں گے۔ بھارت کا کشمیر پر قبضہ دنیا کی بدترین دہشت گردی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ بھارت نے 27 اکتوبر 1947 کو کشمیریوں کی خواہشات کے برعکس جموں و کشمیر میں اپنی فوج اتار کر اس پر ناجائز قبضہ کیا تھا۔ بھارت 7 دہائیوں سے کشمیریوں پر ظلم کر رہا ہے، عالمی برادری مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالیوں کو روکنے میں اپنا کردار ادا کریں۔بھارت نے ابھی تک مقبوضہ کشمیر پر اپنا غاصبانہ اور جبری تسلط برقرار رکھا ہوا ہے اور کشمیریوں کو محکوم سمجھا ہوا ہے،5اگست 2019سے لے کر آج تک 80لاکھ کشمیریوں کو محصور کیا ہوا ہے اور تمام بین الاقوامی قوانین، اقوامِ متحدہ کی قراردادوں اور انسانی حقوق کو پامال کرتے ہوئے مقبوضہ کشمیر کو انسانی پنجرے میں تبدیل کیا ہوا ہے۔

انہوں نے کہاکہ کشمیری سیاسی قیادت کی ایک تعدادکو یا تو جیلوں میں پابند سلاسل کیا یا گھروں میں نظر بند کیا گیا ہے، مقبوضہ کشمیر میں قتل و غارت گری،خواتین کی عصمت دری اور اجتماعی قبروں کو نہ ختم ہونے والا سلسلہ جاری ہے۔ بھارت کو اقوام متحدہ کی قرارداد کے تحت کشمیریوں کو حق دینا پڑے گا، ہم امن چاہتے ہیں۔ امن کے لیے کشمیریوں کو ان کا حق خود ارادیت دینا ہوگا۔ کشمیریوں کی تیسری نسل بھارت کے خلاف برسرپیکار ہے بھارت نوشتہ دیوار پڑھ لے  اسے ذلت کے ساتھ کشمیر سے نکلنا پڑے گا۔بھارتی قابض افواج کو کشمیر کے کونے کونے میں مزاحمت کا سامنا کرنا پڑتا ہے کشمیریوں کی تیسری نسل بھارت کے خلاف برسرپیکار ہے بھارت نوشتہ دیوار پڑھ لے اسے ذلت کے ساتھ کشمیر سے نکلنا پڑے گا۔ آج کا دن انسانی تاریخ کے ایک تاریک باب کو اجاگر کرتا ہے جموں و کشمیر پر بھارت کا غیرقانونی قبضہ بین الاقوامی تنازع ہے، اقوام متحدہ سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق تنازع کشمیر کے پرامن حل کے لیے اپنا کردار ادا رکرے۔

صدر تحریک کشمیر برطانیہ راجہ فہیم کیا نی نے صدر ریاست آزا د جموں و کشمیر سردار مسعود خان اور الطاف احمد بٹ سمیت تمام شرکا کا خصوصی طور شکریہ ادا کیا اور عزم کا احاطہ کیا کہ تحریک کشمیر برطانیہ کشمیر کے حق خودارادیت سمیت انکے حقوق دلوانے اور بھارت کا مکرہ چہرہ بے نقاب کرنے میں کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کریگی۔

مظاہرے میں مفتی عبدالمجید نریم نائب صدر تحریک کشمیر برطانیہ، سردار آفتاب ایڈوکیٹ ناِب صدر تحریک کشمیر برطانیہ، راجہ قمر عباس صدر تحریک کشمیر برطانیہ برمنگھم برانچ ، انعام الحق خواجہ تحریک انصاف، سید عاشق حسین کاظمی ، رفعت مغل چیر پرسن اپوا، زبیدہ بیگم چیر ، مجاہد حسین جماعت اسلامی ، اعظم فاروق، چوہدری خادم ، مشتاق شاہ ، چوہدری منظور، نائب مغل، جبران ناصر اور دیگر سیاسی راہنماوں نے شرکت کی۔