کورونا وائرس ،مزید 6افراد چل بسے ،اموات 6745ہو گئیں

انٹرنیٹ فوٹو

اسلام آباد:گذشتہ 24گھنٹوں کے دوران پاکستان میں عالمی وبا کورونا وائرس کے سبب مزید6 افراد دم توڑ گئے ہیں جس کے بعد ملک میں کوروناوائرس سے انتقال کرنے والے مریضوں کی کل تعداد 6ہزار745ہوگئی ہے۔اس وقت ملک میں 576کوروناوائرس مریضوں کی حالت تشویشناک ہے۔

پاکستان میں کوروناوائرس سے انتقال کرنے والے مریضوں کی شرح دو فیصد جبکہ صحتیاب ہونے والے مریضوں کی شرح 94.6فیصد ہو گئی ہے۔ گذشتہ 24گھنٹوں کے دوران ملک میں کوروناوائرس کے365مریض صحتیاب ہو کر گھروں کو چلے گئے۔ صوبہ سندھ کوروناوائرس کے رپورٹ ہونے والے کل کیسز، انتقال کرنے والے مریضوں، صحتیاب ہونے والے مریضوں اور فعال کیسز کے اعتبار سے ملک بھر میں پہلے نمبر پر ہے جبکہ صوبہ پنجاب دوسرے نمبر پر ہے۔

کوروناوائرس کے ایکٹو کیسز کے اعتبار سے وفاقی دارلحکومت اسلام آباد تیسرے نمبر پر ہے اوراسلام آباد میں کوروناوائرس کے ایکٹو کیسز کی تعداد1,467تک پہنچ گئی ۔ نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر (این سی او سی) کی جانب سے منگل کے روز جاری تازہ اعدادوشمار کے مطابق گذشتہ24گھنٹوں میں کورونا کے773نئے کیسزرپورٹ ہوئے اور مجموعی تعداد 3لاکھ29 ہزار375تک پہنچ گئی۔پاکستان میں3 لاکھ11ہزار440کورونا مریض صحت یاب ہوچکے ہیں اور ایکٹو کیسز کی تعداد11ہزار190ہے۔

کورونا وائرس کے باعث پنجاب میں 2ہزار 336اور سندھ میں 2ہزار 599اموات ہو چکی ہیں۔ خیبر پختونخوا میں اموات کی تعداد ایک ہزار 270، اسلام آباد میں 213، بلوچستان میں 149، گلگت بلتستان میں 91اور آزاد کشمیر میں 87ہو گئی ہے۔اسلام آباد میں کورونا کیسزکی تعداد 18ہزار 181ہوگئی۔ پنجاب ایک لاکھ 3ہزار 82، سندھ میں ایک لاکھ 44ہزار114، خیبر پختونخوا میں 39ہزار119، بلوچستان میں 15ہزار 839، گلگت بلتستان میں 4ہزار 191اور آزاد کشمیر میں 3ہزار 849کیسز رپورٹ ہوئے ۔ملک  بھر میں اب تک 43لاکھ 17ہزار 678افراد کے ٹیسٹ کئے گئے، گذشتہ 24گھنٹوں کے دوران 27ہزار 133نئے ٹیسٹ کئے گئے، اب تک 3لاکھ 11ہزار 440مریض صحتیاب ہوچکے ہیں جبکہ 576مریضوں کی حالت تشویشناک ہے۔

مزید پڑھیں: قائداعظم یونیورسٹی میں 5 کورونا کیسز کی تصدیق

پاکستان کے 735اسپتالوں میں کورونا مریضوں کیلیے سہولیات ہیں اور اسپتالوں میں کورونا کے مریضوں کیلئے وینٹی لیٹرزکی تعدادایک ہزار920ہے۔ ملک میں 132 ٹیسٹنگ لیبارٹریز کام کر رہی ہیں اور متعدد شہروں میں ٹریس، ٹیسٹ اورقرنطینہ حکمت عملی موثر طریقے سے کام رہی ہے۔