ملکی مسائل کا حل صرف نظام مصطفی کے نفاذ میں ہے،سراج الحق


لاہور :امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ ملکی مسائل کا حل صرف نظام مصطفیۖ کے نفاذ میں ہے۔ جماعت اسلامی سیاسی بریانی میں شامل ہونے کی بجائے اصل اپوزیشن کا کردار ادا کررہی ہے ۔ پیپلز پارٹی یا ن لیگ حکومت گرانا چاہتیں ہیں تو استعفے دیکر اسمبلیوں سے باہر آئیں ۔اپوزیشن اسمبلیوں سے باہر آجائے توحکومت ایک دن نہیں چلے گی۔جس دن اپوزیشن کی طرف سے استعفے آئے جماعت اسلامی بھی استعفے دے دے گی۔
ان خیالات کا اظہارسینیٹر سراج الحق نے منصورہ میں تربیتی ورکشاپ کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔امیر جماعت نے مہنگائی ،بیروزگاری کے حوالے سے کہا کہ جماعت اسلامی یکم نومبر سے مہنگائی بے روز گاری اور سودکے خلاف تحریک کا آغاز کررہی ہے ۔جب تک سودی معیشت ہے ملک ترقی اور خوشحالی کی منزل حاصل نہیں کرسکتا۔اپوزیشن جماعتیں حکومت سے عوامی مسائل مہنگائی بے روز گاری ،بدامنی ،تعلیم یا صحت پر نہیں ،یہ اقتدار اور باریوں کی جنگ لڑ رہے ہیں۔پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن عوام کو دھوکہ نہیں دے سکتیں ۔ملکی مسائل کا حل صرف نظام مصطفیۖ کے نفاذ میں ہے ۔قرآن و سنت کے نفاذ کیلئے جدوجہد کرنا حضور ۖ سے محبت و عقیدت کا بہترین اظہار ہے ۔

مزید پڑھیں:پی پی ، ن لیگ استعفے دے دیں، جماعت اسلامی ساتھ دےگی، سراج الحق
امیر جماعت نے کہا کہ حکومت نے ہر وہ کام کیا ہے جس کے نہ کرنے کا وعدہ کیا تھا۔ جس کا وعدہ کیا تھاوہ ایک بھی کام نہیں کیا ۔موجودہ حکومت سابقہ حکومتوں کا مجموعہ اور سابقہ حکومتوں کی پالیسیوں پرگامزن ہے ۔جو وزیر مشیر مشرف ،ن لیگ اور پیپلز پارٹی میں تھے وہی موجودہ حکومت کی کابینہ میں شامل ہیں۔سابقہ حکومتوں میں ناکامیوں اور کرپشن کی داستانیں رقم کرنے والوں کو نہلا دھلا کر موجودہ حکومت میں شامل کردیا گیا ہے لیکن عوام اب ان بہرپیوں کے فریب میں نہیں آئیں گے۔
انہوں نے کہا کہ احتساب کے نام پر قوم کو ایک بار نہیں بار بار دھوکہ دیا گیا ۔کھربوں روپے ڈکارنے والوں سے چند کروڑ لے کر چھوڑ دیا جاتا ہے ،عوام حکومت اور نیب سے سوال کرتے ہیں کہ قومی دولت لوٹنے والوں کو چھوڑنے کا اختیار انہیں کس نے دیا ہے ۔انہوںنے کہا کہ کرپشن کے خاتمہ کا نعرہ لگانے والوں کے دور میں کرپشن اور رشوت کے ریٹس بڑھ گئے ہیں۔
سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ مہنگائی پر وزیر اعظم کی نیند اڑنا اچھی بات ہے مگر کیا دوسال سے جب مہنگائی اوربے روز گاری مسلسل بڑھ رہی تھی انہیں نظر نہیں آرہی تھی اب اچانک انہیں عوام کی پریشانیاں کیوں ستانے لگی ہیں۔وزیر اعظم اگر مہنگائی کم کرنا چاہتے تو ان کے ایک حکم سے اس کا راستہ رک سکتا تھا ۔مہنگائی کرنے والے آٹا ،چینی اور ڈرگ مافیاز تو اب بھی وزیر اعظم کے ارد گرد موجود ہیں انہیں پکڑیں اور ذخیرہ اندوزی کرنے والوں کا راستہ روکیں انہوں نے کہا کہ ناکام ہونے والے حکمرانوں اپنے آخری دنوں میں یہی باتیں کرتے ہیں۔حکمران جب اقتدار کی کرسی سے نیچے اترتے ہیں تو انہیں عوام کے دکھوں اور مصیبتوں کا پتہ چلتا ہے لیکن جب تک وہ اقتدار میں رہتے ہیں انہیں اپنے سوا کوئی نظر نہیں آتا ۔
سینیٹر سراج الحق کا مزید کہنا تھا کہ جماعت اسلامی عوام کی ترجمان اور آواز ہے ہم عوام کیلئے اقتدار کے ایوانوں اور ملک کے گلی کوچوں میں آواز اٹھا رہے ہیں ۔حکومت فیٹف کے احکامات پر عوام کی گردن مروڑنے اور ان کا خون نچوڑنے پر لگی ہوئی ہے ۔فیٹف 2008سے حکومتوں کے ساتھ آنکھ مچولی کھیل رہی ہے ۔آئی ایم ایف اور ورلڈ بنک کے غلام حکمران اپنے عوام کے مسائل حل کرنے کی بجائے عالمی مالیاتی اداروں کے مطالبات اور احکامات کو پورا کرنے میں لگے رہتے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ ظلم و جبر کے اس استحصالی نظام اور اسٹیٹس کو سے نجات حاصل کرنے کیلئے ملک میں قرآن و سنت کے نظام کے نفاذ اور آئین و قانون کی بالادستی کو یقینی بنانا ہوگا۔