عوامی اتحاد برائے گپکار اعلامیہ بی جے پی مخالف ضرور ہے لیکن ملک دشمن نہیں: فاروق عبداللہ


سرینگر: مقبوضہ کشمیر کے سابق وزیراعلی ا ور سات سیاسی جماعتوں کے عوامی اتحاد برائے گپکار اعلامیہ کے سربراہ  ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ عوامی اتحاد برائے گپکار اعلامیہ بی جے پی مخالف ضرور ہے لیکن ملک دشمن نہیں۔

انہوں نے کہا کہ بی جے پی نے ملک کے آئین کو تہس نہس کرنے کے علاوہ اس ملک کو تقسیم بھی کر دیا ہے۔فاروق عبداللہ نے نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے کہابی جے پی غلط پروپیگنڈا کر رہی ہے کہ گپکار کے لوگ قوم دشمن ہیں، میں ان سے کہنا چاہتا ہوں کہ ہم قوم دشمن نہیں ہیں، بی جے پی  مخالف ضرور ہیں، اس میں کوئی شک نہیں ہے۔

فاروق عبداللہ نے بی جے پی پر ملک کے آئین کو تہس نہس کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہاانہوں نے ملک کے آئین کو ملیا میٹ کیا ، انہوں نے اسے تقسیم کرنے کی کوشش کی ، فیڈرل ڈھانچے کو توڑنے کی کوشش کی ہے جس کی مثال5 اگست 2019 کے فیصلے ہیں، انہوں نے آئین کو تہس نہس کیا ۔ انہوں نے کہاان سے میں یہ کہنا چاہتا ہوں کہ ہم قوم دشمن نہیں ہیں، ہمارا مقصد جموں و کشمیر اور لداخ کے لوگوں کے جو حقوق ہیں وہ انہیں واپس ملنے چاہیے، ہماری لڑائی اس کیلئے ہے،ہماری لڑائی اس سے زیادہ نہیں ہے۔

فاروق عبداللہ نے کہا کہ بی جے پی لوگوں کو مذہب کے نام پر تقسیم کرنے کی کوشش کر رہی ہے جس میں اسے کامیابی نہیں ملے گی۔ ان کا کہنا تھاجو یہ پروپیگنڈا جموں اور ملک کی دوسری جگہوں پر کر رہے ہیں، ہم لوگوں کو مذہب کے نام پر تقسیم کرنے کی، ان کی یہ کوشش ناکام ثابت ہوگی۔ یہ مذہبی لڑائی نہیں ہے، یہ وطن کے تشخص کی لڑائی ہے، اس تشخص کو بحال کرنے کے لئے ہم لوگ ایک ساتھ کھڑے ہیں’۔

مزید پڑھیں: کشمیری کل دنیا بھر میں بھارت کے غاصبانہ قبضے کے خلاف یوم سیاہ منا ئیں گے

ان کا مزید کہنا تھا: ‘جہاں ہم اٹانومی کی بات کرتے ہیں، دفعہ 370 کی بحالی کی بات کرتے ہیں وہاں ہم جموں اور لداخ کی علاقائی خودمختاری کی بات بھی کرتے ہیں۔ ان کو بھی لگنا چاہیے کہ وہ برابر کے حصے دار ہی