ملتان کے دو مختلف مقامات پر سیوریج کے پانی میں پولیو وائرس کا انکشاف


ملتان: ملتان میں دو مختلف مقامات پر سیوریج کے گندے پانی میں پولیو وائرس کی موجودگی کا انکشاف ہوا ہے، محکمہ صحت نے قطرے پلانے سے انکاری والدین کیخلاف مقدمات درج کرانے کی حکمت عملی تیار کر لی۔

ملتان میں گذشتہ پولیومہم کے دوران تیس ہزار بچے قطروں سے محروم رہے جن میں سے بیشتر کے والدین انکاری بھی تھے جبکہ موجودہ صورتحال میں علی ٹئوون اور سورج میانی سیوریج کے پانی میں پولیو وائرس کی موجودگی کا انکشاف ہوا ہے جس سے پولیو پھیلنے کا خطرہ مزید بڑھ گیا، محکمہ صحت نے 26 اکتوبر کی مہم کے دوران پہلے مرحلے میں انکاری والدین کو قائل کرنے اور دوسرے مرحلے میں مقدمات درج کرانے کی حکمت عملی تیار کر لی ۔

مزید پڑھیں: پولیو سے محفوظ پاکستان ہمارا مشن ہے،عثمان بزدار

محکمہ صحت نے گذشتہ مہم میں تین انکاری والدین کیخلاف مقدمات بھی درج کرائے تاہم انکارری والدین کے رویے پر مہم کی کامیابی کیلئے ذمہ داری کا مظاہرہ کرنے والے والدین کو بھی تحفظات ہیں۔رواں سال جنوبی پنجاب کے مختلف اضلاع سے تین پولیو کیس سامنے آئے ہیں اسی لیے مہم کے دوران ناقص کارکردگی پر پولیو ورکروں کیخلاف بھی محکمانہ کارروائیوں کا فیصلہ کیا گیا  ۔