عوامی مسائل حکومت، اپوزیشن ترجیحات میں شامل نہیں، جاوید قصوری


لاہور: امیرجماعت اسلامی صوبہ وسطی پنجاب محمد جاوید قصوری نے کہاہے کہ حکمرانوں کی مایوس کن کارکردگی کا اندازہ اس بات سے بخوبی لگایا جاسکتا ہے کہ پہلی سہ ماہی میں غیر ملکی سرمایہ کاری میں 24فیصد کمی ہوچکی ہے۔ مہنگائی میں ہو شر با اضافے نے عوام کی زندگی اجیرن بنادی ہے۔ حکومت اور اپوزیشن دونوں نورا کشتی میں مصروف ان کی ترجیحات میں عوامی مسائل شامل نہیں۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روزمختلف پروگرامات سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ حکمران ملکی وسائل سے استفادہ کرنے کی بجائے قرض پر قرض حاصل کرتے چلے جارہے ہیں جو کہ ملکی جی ڈی پی کے 87.2فیصد سے تجاوز کرچکا ہے۔ عوام کو دو وقت کی روٹی میسر نہیں ، رہی سہی کسر بجلی اور گیس کے نرخوں میں نہ رکنے والے سلسلے نے پوری کردی ہے۔

انہوں نے کہا جس نام نہاد تبدیلی کا خواب قوم کو دکھا یا گیا تھا وہ عذاب بن کر قوم پر مسلط ہے۔ حکومت کے اپنے اعداد و شمار کے مطابق پی ٹی آئی کے دور حکومت میں سرکاری اداروں کو 10 کھرب 14ارب کا بھاری نقصان برداشت کرنا پڑا ہے۔ الیکشن سے قبل آئی ایم ایف کی بجائے خود کشی کو ترجیح دینے والوں نے ورلڈ بینک کے ساتھ 21اور ایشیائی ترقیات بنک کے ساتھ 22معاہدے کیے اور14ارب 11کروڑ روپے کا قرض حاصل کیا۔

محمد جاوید قصوری نے اس حوالے سے مزید کہا کہ ملک وقوم کی تقدیر صرف جماعت اسلامی بدل سکتی ہے کیونکہ ہمارے پاس پڑھی لکھی ، دیانت دار اور ہر طرح کی کرپشن سے پاک قیادت اور نظام موجود ہے۔