اومنی گروپ کی بے نامی کمپنیوں کوفراڈ قرض دینے والے2 سہولت کاروں کا اعتراف جرم


راولپنڈی:اومنی گروپ کی بے نامی کمپنیوں کو فراڈ قرض جاری کروانے والے دو سہولت کاروں نے اعتراف جرم کرلیا۔

جعلی اکاونٹس اسکینڈل میں نیب راولپنڈی کی اہم پیشرفت سامنے آئی ہے، اومنی گروپ کی بے نامی کمپنیوں کو فراڈ قرض جاری کروانے والے دو سہولت کاروں شاہ زیب محمود ٹرنک والا اور ذوالفقار علی نے اعتراف جرم کرلیا ہے اور دونوں ملزمان نے نیب سے پانچ کروڑ روپے کی پلی بارگین بھی کی ہے۔

چیئرمین نیب نے دونوں ملزمان کی پلی بارگین منظور کر لی اور عدالت سے بھی توثیق کرائی جائے گی۔نیب کے مطابق شاہ زیب محمود ٹرنک والا نے حسین لوائی سے پانچ کروڑ لے کر گروی کی زمین کا بندوبست کیا تھا، شاہ زیب محمود ٹرنک والا نے 17ایکڑ زمین جام چکرو ، گڈاپ ٹاون ، منگھو پیر میں خریدی اور پھر چار ایکڑ زمین اپنے ماتحت ذوالفقار علی کے نام پر ٹرانسفر کی اور پھر گروی رکھوا دی۔نیب کا کہنا ہے کہ پارک ویو نامی کمپنی کے نام قرض جاری کروانے کے لئے اسی زمین کا استعمال ہوا، شاہ زیب محمود ٹرنک والا نے کمیشن کے 4کروڑ 90لاکھ روپے نیب کو واپس کر دیئے، فراڈ قرض سے بنی بے نامی کمپنیوں کے نام روشن سندھ جیسے منصوبوں کے ٹھیکوں سے اربوں کا غبن ہوتا تھا۔