سپریم کورٹ میں انتہائی اہم مقدمات سماعت کےلئے مقرر

انٹرنیٹ فوٹو

اسلام آباد:سپریم کورٹ آف پاکستان پیر سے شروع ہونے والے عدالتی ہفتے کے دوران اہم مقدمات کی سماعت کرے گی۔جن میں سانحہ پشاور از خود نوٹس کیس،25 ویں آئینی ترمیم کے خلاف درخواست، آغا افتخار الدین توہین عدالت کیس،پیپلز پارٹی کے رہنماخورشید شاہ کی ضمانت کے لیے دائر درخواستوں کی سماعت شامل ہے۔

عدالتی ہفتے کے دوران چھ بینچ مقدمات کی سماعت کریںگے۔بینچ نمبر ایک چیف جسٹس گلزار احمد،جسٹس فیصل عرب اور جسٹس اعجاز الحسن پر مشتمل ہے جو جمعرات کو آغا افتخار الدین کے خلاف توہین عدالت کیس کی سماعت کرے گا۔اسی بینچ کے رو برو جمعہ کے روز سانحہ پشاوراز خود نوٹس کی سماعت بھی ہوگی۔عدالت نے اس مقدمہ میں جوڈیشل انکوائری کی رپورٹ پر وفاقی حکومت سے جواب طلب کر رکھا ہے۔انکوائری رپورٹ آنے کے بعد اس از خود نوٹس کی دوسری سماعت ہوگی۔

بینچ نمبر دو جسٹس مشیر عالم ،جسٹس یحییٰ آفریدی اور جسٹس قاضی محمد امین پر مشتمل ہے اس بینچ نے روبرو منگل کے روز کرنل(ر) انعام الرحیم کی بازیابی کے حکم کے خلاف وفاقی حکومت کی اپیل کی سماعت ہوگی۔

عدالت عظمیٰ کا بینچ نمبر تین جسٹس عمر عطا بندیال ،جسٹس منیب اختر اور جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی پر مشتمل ہے جو بدھ کے روز پیپلز پارٹی کے رہنماءسید خورشید شاہ اور ان کے بیٹے کی ضمانت ،25 ویں آئینی ترمیم کے خلاف درخواست کی سماعت کرے گا۔یاد رہے کہ درخواست گزار ملک انوار اﷲ خان نے فاٹا کے خیبرپختونخوا میں انضمام کے خلاف آئینی درخواست دائر کررکھی ہے۔اسی بینچ کے روبرو کنٹری گن کلب کی زمین سستے داموں دیئے جانے کے خلاف از خود نوٹس کی سماعت بدھ کے روز ہی ہوگی ۔

جمعرات کو سوشل ورکر پروین الرحمن قتل کیس کی سماعت ہوگی۔بینچ نمبر چار جسٹس قاضی فائز عیسیٰ اور جسٹس امین الدین خان پر مشتمل ہے۔بینچ نمبر پانچ جسٹس مقبول باقر ،جسٹس سجاد علی شاہ اور جسٹس منصورعلی شاہ پر مشتمل ہے۔بینچ نمبر چھ کے اراکین میں جسٹس منظور احمد ملک ،جسٹس سردار طارق مسعود اور جسٹس مظہر عالم میاں خیل شامل ہیں