چھٹی تا آٹھویں کلاسز کھولنے کا فیصلہ موخر


کراچی:صوبہ سندھ میں ایس او پیس کی خلاف ورزی دیکھی گئی جس کے باعث  چھٹی تا آٹھویں کلاسز 21 ستمبر سے کھولنے کا فیصلہ موخر کر دیا گیا ہے۔

صوبائی وزیر تعلیم سعید غنی نے اپنی پریس کانفرنس میں کہا ہے کہ تعلیمی ادارے کھولنے کا دوسرا مرحلہ مخر کر کے چھٹی تا آٹھویں کی کلاسز 21 ستمبر سے کھولنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، ساری صورت حال کوایک ہفتہ دیکھیں گے۔

سعید غنی نے کہا ہے کہ کچھ اسکولوں نے چھوٹے بچوں کوبھی بلالیا تھا، اسکولوں کی انتظامیہ لاپرواہی کرے گی تو کارروائی کریں گے۔انہوں نے مزید کہا ہے کہ اگر ایس اوپیز پر عمل نہ کرایا جاسکا تو اسکولوں کے حوالے سے فیصلے پر نظرثانی کرسکتی ہیں۔سعید غنی کا کہنا تھا کہ چھٹی، ساتویں اور آٹھویں کلاسز 21 ستمبر سے نہیں کھلیں گی۔

سعید غنی نے کہا ہے کہ احساس ہو رہا ہے کہ بچوں کی تعلیم اور ایجوکیشن انڈسٹری کو نقصان ہو رہا ہے، والدین بچوں میں ایس اوپیز کے حوالے سے حساسیت پیدا کریں۔واضح رہے کہ اس سے قبل وزیر تعلیم و محنت سندھ سعید غنی کی جانب سے  گزشتہ منگل کو 6 ماہ کے بعد کھلنے والے تعلیمی اداروں کا اچانک دورہ کیا گیا تھا۔