ترکی کا بھارت سےکشمیر میں پابندیاں ختم کرنے کا مطالبہ


جینوا :  ترکی نے بھارتی حکومت سے اپنا یہ مطالبہ دہرایا ہے کہ وہ غیر قانونی طور پر اپنے زیر قبضہ جموں و کشمیر میں پابندیاں ختم کرے۔

ایک میڈیا رپوٹ کے مطابق جنیوا میں انسانی حقوق کونسل کے 45 ویں اجلاس میں ترکی نے ایک بیان میں کہا کہ ہماری خواہش ہے کہ مسئلہ کشمیر اقوام متحدہ کی متعلقہ قراردادوں کی بنیاد پر بھارت اور پاکستان کے درمیان پرامن طریقے سے حل ہوجائے۔

ہائی کمشنر کے افتتاحی خطاب پر عام بحث کے دوران ترکی نے فلسطینیوں کے خلاف انسانی حقوق کی پامالیوں پر بھارت کے اتحادی اسرائیل پر بھی شدید تنقید کی۔بھارت نے گزشتہ سال 5 اگست کو جموںوکشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کردی تھی اور اسے وفاق کے زیر انتظام دو علاقوں میں تقسیم کیا تھا۔

احتجاجی مظاہروں کوروکنے کے لئے سیاسی رہنماؤں سمیت ہزاروں افراد کو گرفتارکیاگیاتھا جبکہ علاقے میں مواصلاتی رابطے منقطع اوراسکا محاصرہ کیا گیا تھا جو آج تک  جاری ہے۔جموں و کشمیر کے 20 اضلاع میں سے صرف دو اضلاع میں ہی تیز رفتار انٹرنیٹ کو بحال کیا گیا ہے۔دنیا کو مقبوضہ علاقے کے حالات سے بے خبر رکھنے کے لیے صحافیوں پر انسداد دہشت گردی کے کالے قانون کے تحت مقدمات درج کئے گئے۔