گندم کی مستقبل کی ضروریات کے حوالے سے بروقت پیشگی انتظامات کو یقینی بنا یا جائے ،عمران خان


اسلام آباد : وزیرِ اعظم عمران خان  نے ہدایت کی ہے کہ گندم کی مستقبل کی ضروریات کے حوالے سے بروقت پیشگی انتظامات کو یقینی بنا یا جائے گندم کی وافر مقدار میں فراہمی کو یقینی  بنانے کے لئے نجی شعبے کے ساتھ ساتھ ٹی سی پی کی جانب سے بھی گندم درآمد کی جائے گی۔

 وزیراعظم کی زیر صدارت گندم اور چینی کی دستیابی اور قیمتوں کے حوالے سے اعلی سطح کا اجلاس ہوا۔اجلاس میں وفاقی وزرا محمد حماد اظہر، سینیٹر شبلی فراز، سید فخر امام، مشیر خزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ، مرزا شہزاد اکبر، معاون خصوصی ڈاکٹر شہباز گل، گورنر سٹیٹ بنک، وزیرِ خوراک پنجاب  عبدالعلیم خان، متعلقہ محکموں کے سیکرٹری صاحبان جبکہ چیف سیکرٹری صاحبان ویڈیو لنک کے ذریعے اجلاس میں شریک تھے ۔

وزیر اعظم کو گندم کی دستیابی کی صورتحال، صوبہ پنجاب کی جانب سے یومیہ  ریلیز، گندم اور آٹے کی قیمت کی صورتحال اور مستقبل کی ضروریات کو پورا کرنے کے حوالے سے گندم اور چینی کی درآمد کی صورتحال  پر تفصیلی بریفنگ دی گئی ۔نجی شعبے کی جانب سے اب تک درآمد کی جا نے والی  گندم کی مقدار اور آئندہ چند دنوں میں ملک میں پہنچنے والی گندم کی صورتحال پر بریفنگ دی گئی ۔

وزیر برائے صنعت  نے چینی کی مو جودہ قیمتوں اور درآمد کے حوالے سے صورتحال پر بھی وزیرِ اعظم کو بریفنگ دی ۔ملک میں گندم کی  دستیابی کی موجودہ تسلی بخش صورتحال اور صوبہ پنجاب کی جانب سے باقاعدگی سے گندم کی ریلیز پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ مستقبل کی ضروریات کے حوالے سے بروقت پیشگی انتظامات کو یقینی بنا یا جائے۔

وزیرِ اعظم نے کہا کہ گندم کی وافر دستیابی کے ساتھ ساتھ مناسب قیمتوں کو یقینی بنانا بھی حکومت کی اولین ترجیح ہے تاکہ عوام کو  بنیادی خوراک کے ضمن میں کسی قسم کا دقت کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ گندم کی وافر مقدار میں فراہمی کو یقینی  بنانے کے لئے نجی شعبے کے ساتھ ساتھ ٹی سی پی کی جانب سے بھی گندم درآمد کی جائے گی۔