دریائے سندھ میں شدید سیلاب کا خدشہ،الرٹ جاری


کراچی:فلڈ فورکاسٹنگ ڈویژن نے دریائے سندھ میں شدید سیلاب کا الرٹ جاری کرتے ہوئے کہا کہ  سیلاب سے کچے کے علاقے مکمل طور پر زیر آب آسکتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق فلڈ فورکاسٹنگ ڈویژن نے دریائے سندھ میں شدید سیلاب کا خدشے کے پیش نظر الرٹ جاری کردیا، فلڈ فورکاسٹنگ ڈویژن کا کہنا ہے کہ گدو کے مقام پر کل اور سکھر بیراج کے مقام پر بدھ کو انتہائی اونچے درجے کے سیلاب کا خدشہ ہے جس سے کچے کے علاقے مکمل طور پر زیر آب آسکتے ہیں۔

فلڈ فورکاسٹنگ ڈویژن نے کچے کے علاقے کے عوام کی جان ومال کو محفوظ بنانے کے لیے اقدامات کی ہدایت جاری کی ہے اور کہا گدو بیراج کے مقام پر دریائے سندھ پر پانی کا بہا پانچ لاکھ کیوسک ہے اور پانی کی آمد میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے۔فلڈ فورکاسٹنگ ڈویژن کے مطابق سکھر بیراج پر پانی کی آمد چار لاکھ بیس ہزار کیوسک ہے اس وقت درمیانے درجے کا سیلاب ہے اور پانی کا بہائو  مسلسل بڑھ رہا ہے۔

مزید پڑھیں:پاکستانی دریاوں میں پانی کی سطح بلند، سیلاب کا خطرہ

تونسہ کے مقام پر پانی کا بہا چار لاکھ چھپن ہزار کیوسک ہو گیا، تربیلا کے مقام پر دریائے سندھ میں پانی کا بہا ایک لاکھ اسی ہزار کیوسک ہے جبکہ منگلا ڈیم کے مقام پر پانی کا بہائو75ہزار کیوسک اور ہیڈ مرالہ پر دریائے چناب اور نوشہرہ پردریائے کابل میں پانی کابہائو معمول کے مطابق ہے۔

دوسری جانب محکمہ موسمیات اورآبپاشی کی پیشگوئی غلط ثابت ہوئیں ، گڈوبیراج پر کل کے بجائے آج ہی اونچیدرجے کا سیلاب آگیا، پیش گوئی کی گئی تھی کے8ستمبرکواونچیدرجیکاسیلاب ہوگا۔گڈوبیراج پر پانی کی آمد5لاکھ523کیوسک،اخراج4لاکھ77ہزار5 کیوسک ریکارڈ کیگئی جبکہ سکھربیراج پرپانی کی آمد4 لاکھ 20ہزار 125کیوسک اور اخراج3لاکھ86ہزار630 کیوسک ہے۔