پاکستان آزادملک ہے اپنا دفاع کرناجانتاہے،سہیل امان

اسلام آباد:سابق ائیر چیف مارشل سہیل امان نے کہاہے کہ پاکستان آزادملک ہے اور اپنا دفاع کرناجانتاہے،تینوں مسلح افواج کامتفقہ فیصلہ ہے کہ اگربھارت نے سرحد پارکی تو اس کوجنگ تصور کریں گے، پلوامہ حملے کے بعدبھارت کی پاکستان پر جارحیت کے بعد پاکستا ن کے جواب سے معلوم ہوگیاہے کہ وہ پاکستان کا مقابلہ نہیں کرسکتا ،بھارت امریکہ کی طرح دوسرے ممالک کوڈیکٹیشن دینے کے خواب دیکھ رہاہے پاکستان ا سکا یہ خواب کبھی پورا نہیں ہونے دے گا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان ائیرفورس آج اپنے ہتھیار خود بناتاہے ۔ ان خیالات کااظہار سابق ائیر چیف مارشل سہیل امان نے اسٹرٹیجک ویژن انسٹیٹیوٹ کے زیراہتمام پاک بھارت ایٹمی دھماکوں کی سالگرہ کے حوالے سے منعقدہ سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

سابق ائیر چیف مارشل سہیل امان نے کہاہے کہ امریکہ اسرائیل اور بھارت کے تعلقات مضبوط ہورہے ہیں سی پیک کے بیلٹ اینڈ روڈ منصوبے اور چین کے دیگر معاشی منصوبوں کی وجہ سے امریکہ دباؤ میں ہے بھارت بھی امریکہ کودیکھ کراقدامات کرتاہے مگر بھارت کی ڈیکٹیشن پاکستان نہیں لیتاہے جبکہ خطے کے دیگر ممالک کو بھارت حکم دیتاہے بھارت کاپاکستان کو ڈیکٹیشن کاخواب کبھی پورا نہیں ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان نے ہمیشہ مثبت بات کی مگر بھارت کی طرف سے ہمیشہ نفی جواب آیاہے بھارت سے مسلسل نفرت کے پیغام آرہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ پاکستان کے تینوں مسلح افواج کامتفقہ فیصلہ ہے کہ بھارت کی طرف سے کسی بھی قسم کی جارحیت کابھرپور جواب دیں گے بھارت کی طرف سے اگر سرحد پار کی جائے گی تو اس کوجنگ تصور کیاجائے گااس میں ہم تفریق نہیں کریں گے کہ وہ حملہ فوجی تنصیبات پر ہو یاسول تنصیبات پر ۔سانحہ پشاور میں جب اے پی ایس کے بچوں کوشہید کیاگیاتو ہمیں معلوم تھاکہ دہشت گرد افغانستان میں پاکستان کے سرحد کے قریب موجود ہیں مگر ہم نے جذبات میں فیصلہ نہیں کیاکہ وہاں پر بمباری کریں جو ہم کرسکتے تھے ۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم نے افغان حکومت اور افغانستان میں موجود بین الاقوامی فوج کو معلومات دی کہ آپ ان کے خلاف کارروائی کریں دہشت گردوں نے ائیرفورس کے بیس پر حملہ کرکے ہمارے نگرانی کرنے والے جہاز بتاہ کئے جو پاکستان میں دہشت گردی کی جنگ میں استعمال نہیں ہورہے تھے پاکستان نے ان 285ملین ڈالر کے جہازوں کوخود دوسال قبل بحال کیااور آج پاکستان ایوی ایشن کے حوالے سے دنیاکی پانچویں ایجنسی ہے آج پاکستان نے غیرملکی ہتھیاروں پر انحصار ختم کردیاہے آج پاکستان ائیرفورس اپنے ہتھیار خود بنارہاہے جبکہ بھارت ہتھیاروں کے حوالے سے روس پر انحصار زیادہ کررہاہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کے پاس 410جنگی جہاز ہیں اگر بھارت جارحیت کرتاہے تو اس کوبھرپورجواب دیاجاسکتاہے ہمارے پاس اس کی صلاحیت ہے کہ ہم بھارت میں داخل ہوئے بغیر اپنے اہداف کو نشانہ بناسکتے ہیں آج جنگ میں فضائیہ کی بہت زیادہ اہمیت ہے انہوں نے کہاکہ بھارتی جارحیت کاجب پاکستان نے جواب دیاتو بھارت نے دوبارہ جارحیت کی کوشش اس لیے نہیں کی کہ بھارتی ائیر فورس کوپتہ چل گیاتھاکہ ہم پاکستان کی طاقت کا مقابلہ نہیں کرسکتے ہیں یہی وجہ ہے کہ جب پاکستان نے جواب دیاتو بھارتی فوج نے اپنا ہیلی کاپٹر خود مارگرایا۔

انہوں نے کہا کہ بھارت کی مثال اس بلی سے ہے جو شیشے کے سامنے جائے تو اپنے آپ کو شیر سمجھے۔پاکستان آزادملک ہے اور اپنا دفاع کرناجانتاہے۔صدرایس وی آئی ڈاکٹرظفر اقبال چیمہ نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ بھارت اور پاکستان نے بھی مختلف قسم کے بلسٹک میزائل بنائے ہیں روس بلسٹک میزائل دوسرے ممالک کو بھی دیتاہے.بھارت اور امریکہ ایک پیج پر جبکہ چین پاکستان کے ساتھ ہے۔

انہو ں نے کہاکہ کیا کم ازکم ایٹمی صلاحیت کے ہمارے موقف کو تبدیل کرنے کی ضرورت ہے۔پاکستان کوبھارت سے خطرہ ہے بھارت نے پلوامہ حملے کے بعد پاکستان پر حملہ کیاایٹمی ممالک میں اس طرح کے حملے نہیں ہوتے ہیں بھارت کو دھمکیوں کا جواب دینا ضروری ہے پاکستان پر حملے کے بعد بھارت کو ایک اچھا جواب دیاگیا۔بھارتی وزیراعظم نریندرمودی پاکستان کے ساتھ تعلقات بہتر نہیں کرے گا ان مسائل کو دوبارہ دیکھنے کی ضرورت ہے۔