ڈاکٹرعبدالقدیر کی صحت کے حوالے سے حکومتی عدم دلچسپی، جماعت اسلامی نے قومی اسمبلی میں قرارداد جمع کرادی


 اسلام آباد(صباح نیوز)جماعت اسلامی نے ڈاکٹر عبدالقدیر کی صحت کے حوالہ سے حکومتی عدم دلچسپی کے خلاف قومی اسمبلی میں قرارداد جمع کرا دی.قرارداد جماعت اسلامی کے رکن قومی اسمبلی مولانا عبدالاکبر چترالی نے جمع کرائی،قرارداد کے متن میں کہا گیا ہے کہ قومی اسمبلی کا یہ ایوان عظیم ایٹمی سائنسدان اور محسن پاکستان ڈاکٹر عبدالقدیر خان کی گزشتہ دو ہفتوں سے کورونا وباجیسی بیماری کے بعد صحت یابی پر اللہ رب العزت کا شکر ادا کرتا ہے۔

قومی اسمبلی کا یہ ایوان اس امر پر تشویش کا اظہار کرتا ہے کہ ڈاکٹر عبدالقدیر مورخہ 26اگست سے ہسپتال میں زیر علاج ہیں اور پوری قوم اپنے محسن کی صحت کے لیے اللہ رب العزت سے دعا ئیں کر رہی ہے لیکن وزیر اعظم،صدر اور وفاقی وزراء میں سے کسی کو فو ن پر یا ہسپتال جا کر ان کی خیریت دریافت کرنے کی توفیق نہیں ہوئی۔قومی اسمبلی کا یہ ایوان اس امر پر بھی شدید تشویش کا اظہار کرتا ہے کہ ڈاکٹر عبدالقدیر خان کی وفات کی جعلی خبر چلی لیکن حکومتی سطح پر اس حوالہ سے کوئی تفتیش نہیں ہوئی اور نہ کوئی ایکشن لیا گیا۔

قومی اسمبلی کا یہ ایوان وفاقی حکومت سے مطالبہ کرتا ہے کہ ڈاکٹر عبدالقدیر کی صحت کے لیے قومی سطح پر عوام سے دعاؤں کی اپیل کی جائے۔الحمد للہ ان کی صحت بہتر ہورہی ہے۔مکمل علاج معالجہ کے لیے تمام وسائل بروئے کار لائے جائیں۔وزیر اعظم پاکستان،صدر پاکستان سمیت تمام دستوری اداروں کے سربراہان خود ڈاکٹر عبدالقدیر خان کی تیمارداری کو یقینی بنائیں۔ ڈاکٹر عبدالقدیر خان پر تمام پابندیاں ختم کرتے ہوئے فوری طور پر ان کے لیے آزاد فضاؤں میں زندگی گزارنے کو یقینی بنایا جائے۔آئین اور قانون میں موجود تمام بنیادی سہولتیں فراہم کی جائیں۔ ان کی رہائش گاہ کوملک کے اعلی سطح سربراہ کا درجہ دیتے ہوئے تمام پروٹوکول اور حفاظتی انتظامات کیے جائیں۔