افغان طالبان نے نئی حکومت کا اعلان کر دیا، محمد حسن اخوند سربراہ ہوں گے


 کابل(صباح نیوز)افغان طالبان نے اپنی نئی حکومت کا اعلان کر دیا، ملا محمد حسن اخوند سربراہ ہوں گے۔افغانستان کی نئی حکومت کا اعلان طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے درالحکومت کابل میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ نئی اسلامی حکومت کے قائم مقام سربراہ ملا محمد حسن اخوند ہوں گے۔ ملا عبد الغنی برادر قائم مقام نائب وزیراعظم ہوں گے، سراج الدین حقانی قائم مقام وزیر داخلہ ہوںگے۔

ا نہوں نے کہا کہ طالبان کے بانی امیر ملا عمر کے صاحبزادے مولوی یعقوب مجاہد قائم مقام وزیر دفاع ہوں گے۔ ملا امیر خان متقی قائم مقام وزیر خارجہ ہوں گے۔ قاری دین محمد حنیف قائم مقام وزیر اقتصادی امور ہوں گے۔ ملا فضل اخوند افغانستان کے چیف آف آرمی سٹاف ہوں گے۔ ملا عبد الحق وثیق کو این ڈی ایس سربراہ بنایا گیا۔ذبیح اللہ مجاہد نے کہا کہ افغان حکومت میں ملا خیراللہ خیر خواہ کو وزیر اطلاعات کا عہدہ دیا گیا ۔

ملا ہدایت اللہ وزیر ماحولیات ہوں گے۔ نور محمد ثاقب وزارت حج و اوقاف، عبد الحکیم شرعی وزیر قانون ہوں گے۔انہوں نے اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے بتایا کہ عباس استانکزئی کو قائم مقام ڈپٹی وزیر خارجہ مقرر کیا گیا۔ ملا عبد المنان فوائد و اعمال، نور اللہ نوری وزیر سرحدی امور و قبائل ، یونس اخونزادہ انٹیلی جنس، ملا عبد المنان فوائد و اعمال، شیخ نور اللہ منیر سرپست وزیر ہونگے، خلیل الرحمان حقانی وزیر برائے مہاجرین ہوں گے۔

طالبان ترجمان نے کہا کہ افغانستان میں کسی کی مداخلت قبول نہیں، ہم نے افغانستان میں مداخلت کرنے والے امریکا کے خلاف بیس سال تک جدوجہد کی بالآخر فتح حاصل کی، ہمارے معاملات میں پاکستان کوئی مداخلت نہیں کررہا یہ محض 20 سال سے پروپیگنڈا کیا جارہا ہے۔انہوں نے کہا کہ عبوری حکومت تشکیل دے دی گئی ہے تاہم اس میں موجود متعدد عہدوں کے لیے کئی ناموں کا اعلان بعد میں کیا جائے گا۔