افغانستان میں تنازعات اورعدم استحکام پاکستان کے مفاد میں نہیں:وزیراعظم


اسلام آباد:وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ افغانستان میں پائیدار امن سے علاقائی معاشی رابطوں کو فروغ ملے گا، وہاں تنازعات اور عدم استحکام میں اضافہ پاکستان کے مفاد میں نہیں ہے،وزیراعظم عمران خان سے امریکی نمائندہ خصوصی زلمے خلیل زاد نے اہم ملاقات کی جس میں افغانستان کی موجودہ صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

ملاقات میں افغان امن عمل کو تیز کرنے کے حوالے سے امور پر بھی گفتگو ہوئی۔ دونوں رہنماں کی ملاقات کے بعد جاری اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ وزیراعظم نے افغانستان میں قیام امن کے لیے وسیع البنیاد اور جامع سیاسی تصفیے پر زور ددیتے ہوئے قیام امن کی کوششوں میں پاکستان کے مثبت کردار کو اجاگر کیا۔

وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ افغانستان میں تنازعات اور عدم استحکام بڑھنے سے پاکستان کو سنگین چیلنجز کا سامنا کرنا پڑے گا۔ میں نے ہمیشہ کہا کہ افغانستان میں تنازعہ کا کوئی فوجی حل نہیں ہے۔ان کا کہنا تھا کہ طاقت کے ذریعے حکومت کا نفاذ تنازعہ کے حل کا باعث نہیں ہوگا۔ مذاکرات اور بات چیت سے افغانستان میں دیرپا امن اور استحکام آئے گا۔

انہوں نے کہا کہ پرامن اور مستحکم افغانستان کے لیے پاکستان مستقل حمایت کرے گا۔ ایک محفوظ اور محفوظ مغربی سرحد پاکستان کے مفاد میں ہے۔ پاکستان امن کی کوششوں میں امریکہ اور دیگر متعلقہ ممالک کے ساتھ بہترین تعلقات چاہتا ہے۔