اسپیکر قومی اسمبلی اسدقیصر کی سربراہی میں خصوصی کمیٹی برائے زرعی مصنوعات کا اجلاس


اسلام آباد: اسپیکر قومی اسمبلی اسدقیصر کی سربراہی میں خصوصی کمیٹی برائے زرعی مصنوعات کا اجلاس ہوا جس میں کاشتکاروں نے بتایا کہ تمباکو کی پیداواری لاگت فی ایکڑ 8 لاکھ 44 ہزار روپے ہے، فی ایکڑ پیداوار 3500 کلو گرام ہے۔

سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کا کہنا تھاکہ قومی اسمبلی عوام کے ایشوز کے حل کا ادارہ ہے، اگر عوام کے مفاد کے لیے قانونی سقم ہے تو فوری دور کریں گے،عوام کی بہتری کے لیے قانون سازی کریں گے۔

اس موقع پر اسپیکر قومی اسمبلی نے زراعت کے لیے خصوصی ذیلی کمیٹی کو زمہ داری سونپ دی۔ انکا کہنا تھاکہ ذیلی کمیٹی تمباکو کی پیداواری لاگت کا تخمینہ لگائے گی،ذیلی کمیٹی پیداواری لاگت کے تعین کے لئے تھرڈ پارٹی آڈٹ کے لیے قانون سازی تجویز کرے گی، قومی اسمبلی کی خصوصی کمیٹی برائے زراعت کی ذیلی کمیٹی کی کنوینئر شاندانہ گلزار ہیں۔

اجلاس میں کاشتکاروں کی جانب سے  بتایاگیا کہ کاشتکار کو 37 روپے فی کلو نقصان برداشت کرنا پڑتا ہے۔ اس دوران  پاکستان ٹوبیکو بورڈ اور کاشتکاروں کے درمیان پیداواری لاگت پر اختلاف سامنے آیا۔

عاطف خان نے کہاکہ اسوقت سب سے کم سگریٹ کا ریٹ پاکستان میں ہے ،اگر کاشتکاروں کی لاگت زیادہ ہے تو سگریٹ کا ریٹ بڑھا دیا جائے،  اگر دال، آٹے کی قیمت بڑھتی ہے تو سگریٹ کا ریٹ بڑھنے میں کیا فرق ہے۔

سپیکر قومی اسمبلی نے ہدایت کی کہ ٹوبیکو بورڈ تمباکو کی قیمت کے تعین کیلئے تھرڈ پارٹی آڈٹ کرائے۔تھرڈ پارٹی تمباکو کی پیداواری لاگت کا تعین کر کے قیمت کا تعین کرے گی

اس موقع پر تمباکو کے حوالے سے موجود آرڈیننس میں ترامیم کی تجویز کیلئے بھی سپیکر نے ذیلی کمیٹی بنادی

دوران اجلاس سیکرٹری فوڈ کا کہناتھا کہ اگر تھرڈ پارٹی پر بھی اعتماد نہ کیا جائے تو پھر کیا ہو گا،؟

سپیکر اسد قیصر کا کہناتھا کہ یہ کام عوام کی بہتری کیلئے ہوتے ہیں، فخر امام نے کہاکہ جو ہماری ٹیکنیکل تحفظات ہوں گے اس سے ہم کمیٹی کو آگاہ کریں گے، ہمارا مقصد پیداوار بڑھنا اور کاشتکار کو مناسب معاوضہ ملنا ہے، سپیکرنے کہاکہ یہ معاملہ ہم ذیلی کمیٹی کو بھیجتے ہیں۔