موجودہ حکمرانوں نے مہنگائی کے ریکارڈ توڑ ڈالے ہیں ـصدر کسان بورڈ پاکستان


بھائی پھیرو (صباح نیوز)نام نہاد ٹیکس فری بجٹ کے بعد تین دفعہ تیل اورایک،ایک دفعہ بجلی اور گیس کی قیمتوں میں ہوش ربااضافہ کرکے زراعت اور صنعت کا بوریا بستر گول کر دیا۔مہنگائی کے سونامی میں پوری معیشت تنکوں کی طرح بہہ جائے گی۔موجودہ حکمرانوں نے مہنگائی کے ریکارڈ توڑ ڈالے ہیں۔

ان خیالات کا اظہار کسان بورڈ پاکستان کے صدر چوہدری شوکت علی چدھڑنے  بھائی پھیرو میں میڈیا سے گفتگو کرتے کیا۔کسان بورڈ پاکستان کے صدرچوہدری شوکت علی چدھڑنے نام نہاد ٹیکس فری بجٹ کے بعد تین دفعہ تیل اورایک،ایک دفعہ بجلی اور گیس کی قیمتوں میں ہوش ربااضافہ کرکے قیمتوں میں حالیہ اضافے کو کسا نوں اور پوری قوم کااستحصال قراردیتے ہوئے کہاہے کہ تیل اور بجلی کی قیمتوں میں ہوش ربااضافے سے ہزاروں ٹیوب ویل بند ہو جائیں گے اور زرعی مشینری کا پہیہ جام ہوجائے گا ۔

انہوں نے کہاجب سے موجودہ حکومت نے اقتدارسنبھالاہے عوام کوکسی قسم کاکوئی ریلیف نہیںمل سکا۔ انہوں نے کہابجلی، گیس، پٹرولیم ،کھاد،بیج سمیت اشیاء خوردونوش کی قیمتوں میں کمی کی بجائے مسلسل اضافہ کرکے عوام کوزندہ درگورکردیاگیاہے یہ پاکستان کے عوام کے ساتھ ظلم کی بدترین مثال ہے۔

انہوں نے کہاعوام پہلے ہی بجلی کی لوڈشیڈنگ،اووربلنگ ، بجلی اور گیس کی قیمتوں میں بے پناہ اضافے سے سخت پریشان ہیں حکومت نے تیل اورڈیزل کی قیمت میں اضافہ کر کے انہیں عیدالاضحی  کی خوشیوں سے محروم اورمزیدان کی زندگیوں کو اندھیرے میں رکھنے کے احکامات جاری کردیے ہیں۔ حکومت عوام کے منہ سے آخری نوالہ بھی چھین لیناچاہتی ہے۔

ملک میں غربت، بے روزگاری کی وجہ سے آئے روز خودکشیاں ہورہی ہیں، پٹرول، ڈیزل اورمٹی کے تیل کی قیمتوں میں ہوشربااضافہ سے کسانوں  اور عوام کے مسائل میں بہت اضافہ ہو گا اورملک کی زراعت ، صنعت اور معیشت تباہ ہو جائیگی۔صرف ایک ماہ میں موجودہ حکومت نے گزشتہ ستر سال کے مہنگائی کے ریکارڈ توڑ دیے ہیں اور حکمرانوں نے مہنگائی کا سونامی لا کر اپنے سونامی لانے کا وعدہ پورا کر دیا ہے ۔

اس وقت ملک کے ستر فی صد کسان مہنگائی اور ناکام حکومتی پالیسیوں سے سخت نالاں ہیں مگر حکومت ان مظلوم کسانوں کی غیرت کو للکار کر سڑکوں پر آنے کیلیے مجبور کر رہی ہےـ