فلسطین پر مسلم امہ کو یکجا کیا جائے، وزیر خارجہ


اسلام آباد: وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ فلسطین میں جارحیت پر عالمی برادری فوری حرکت میں آئے اور اسرائیلی جارحیت رکوائے۔

  وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے او آئی سی ایگزیکٹو کمیٹی اجلاس کے بعد ذرائع ابلاغ سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ مسئلہ فلسطین پر مسلم امہ کو یکجا کیا جائے۔

ان کا کہنا تھا کہ فلسطین میں اسرائیلی جارحیت کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے۔انہوں نے کہا کہ بطور وزیرخارجہ غمزدہ پاکستانی عوام کی ترجمانی کی۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کی خواہشات کے مطابق دوٹوک مقف پیش کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ قائد اعظم نے فلسطینیوں کے لیے جو آواز بلند کی وہ ہماری خارجہ پالیسی کا اہم ستون ہے۔انہوں نے کہا کہ اسرائیل بین الاقوامی قوانین کی دھجیاں اڑا رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ رمضان میں نہتے فلسطینیوں پر بدترین تشدد کیا گیا۔ ان کا کہنا تھا کہ اسرائیل طاقت کے استعمال کو فوری بند کرے۔ وزیر خارجہ نے کہا کہ اسرائیلی جارحیت ناقابل برداشت ہے۔

انہوں نے زور دے کر کہا کہ جارحیت کرنے والے اسرائیل اور مظلوم فلسطینیوں کو ایک صف میں نہ کھڑا کیا جائے۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان ہر فورم پر مظلوم فلسطینیوں کے لیے آواز بلند کرے گا۔  مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا کہ فلسطین میں بچوں، خواتین اور بزرگوں کو نشانہ بنایا گیا۔

انہوں نے کہا کہ اسرائیل کو انسانیت کے خلاف جرائم کرنے سے روکا جائے۔وزیر خارجہ نے کہا کہ اسرائیل نے فلسطین میں میڈیا ہاسز کو نشانہ بنایا۔ انہوں نے کہا کہ اسرائیلی مظالم کے خلاف مسلم امہ کا اتحاد وقت کا تقاضہ ہے۔ انہوں نے واضح طور پر کہا کہ مشکل وقت میں فلسطینیوں کو تنہا نہیں چھوڑیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ فلسطین میں سیز فائر ہماری ترجیح ہے۔مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا کہ جس طرح میڈیا ہاوسز کو نشانہ بنایا گیا وہ اس ناکام آواز کو دبانے کی کوشش ہے۔

انہوں نے کہا کہ سوشل میڈیا کے اس دور میں سچائی کو لوگوں کی نظروں سے اوجھل کرنا ممکن نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج شام کو امریکی سیکریٹری خارجہ سے بات ہوگی جب کہ چینی وزیرخارجہ سے کل میری بات چیت ہوئی تھی۔