معاشرے میں تعاونو علی البر کی فضا پیدا کرنے کی ضرورت ہے۔دردانہ صدیقی


اسلام آباد: سیکریٹری جنرل حلقہ خواتین جماعت اسلامی پاکستان دردانہ صدیقی کا کہنا ہے کہ معاشرے میں تعاونو علی البر کی فضا پیدا کرنے کی ضرورت ہے، چھوٹی چھوٹی نیکیاں بھی بڑی تبدیلی لا سکتی ہیں۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے ممبران اسمبلی نام جاری اپنے خط میں کیا۔ خط میں توجہ دلائی گئی کہ رمضان المبارک کے مقدس مہینے میں معرض وجود میں آنے والے وطن عزیز پاکستان کے آئین کی رو سے ہمیں اسلامی نظریہ حیات اور اسلام کے عقائد وعبادات کو اصل روح کے ساتھ نافذ کرنا ہے ۔ پاکستان کے آئین ساز ادارے کے رکن کی حیثیت سے آپ کی ذمہ داری بے حداہمیت کی حامل ہے ۔

خط میں ایسی قانون سازی جس کے ذریعے رمضان المبارک کے بابرکت اثرات معاشرتی زندگی میں نظر آ ئیں، رمضان المبارک کے تقدس کو پامال کر نے والی سرگرمیوں کا سد باب، میڈیا پر بے لگام غیر اسلامی پروگرامات پر کنٹرول، دینی پروگرامات اہل اور با اثر علمائےدین سے منعقد کروانے کے انتظامات ، غیر اخلاقی سرگرمیوں کواخلاقی سانچے میں ڈھالنا یہ سب افعال اصلاح کی غرض سے آپ کی توجہ اور اختیارات کے متقاضی ہیں۔

خط کے مندرجات میں مزید کہا گیا کہ ماہ رمضان کی برکتیں اور فضائل کے حصول کے لئے ہماری اولین ترجیح ہونی چاہیے کہ اللہ کے عائد کردہ فرائض کے ساتھ ساتھ آئین ساز ادارے کے ممبر کی حیثیت سے اپنی ذمہ داریاں اور اس عہد کے تقاضےبھی نبھائیں میں جو ہم نے پارلیمنٹ کے ممبر کی حیثیت سے کیا تھا۔ رمضان المبارک کی آمد پر پچھلے رمضان کی طرح پھر ہماری انفرادی و اجتماعی زندگیاں کروناوبا کی زد میں ہیں من حیث القوم اس سے سبق حاصل کر نے کی ضرورت ہے ۔

خظ میں کہا گیا ہے کہ گفتار وکردار دونوں معنوں میں تبد یلی کی ضرورت ہے تا کہ اللہ کی رضا جوئی کا سلسلہ بحال ہو اور ہماری مساجد ہماری عبادات سے آباد رہیں۔ ممبر سندھ اسمبلی سید عبدالرشید نے بتایا کہ خواتین ممبران اسکا مطالعہ بھی کررہی ہیں اور انکی جانب سےتبصرے بھی موصول ہوئے ہیں۔

اس موقع پر سیکریٹری جنرل دردانہ صدیقی نے سید عبدالرشید کے تعاون پر انکے لئے دعائے خیر اور شکریہ ادا کیا۔ قبل ازیں رمضان کے آغاز پر سیکریٹری جنرل جماعت اسلامی دردانہ صدیقی کی جانب سے خواتین ممبران قومی و صوبائی اسمبلی کے لئے خصوصی خط کے ساتھ دعوتی لٹریچر ہدیتا بھیجا گیا، خواتین ممبران کی جانب سے اس عمل کو سراہا گیا۔