مقبوضہ کشمیر میں پریس آزاد نہیں ہے ۔عالمی کشمیر آگاہی فورم کا اظہار تشویش


واشنگٹن:واشنگٹن میں قائم تنظیم عالمی کشمیر آگاہی فورم نے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق اور لوگوں کے اظہار رائے کی آزادی کے لئے بین الاقوامی یکجہتی  کی اپیل کی ہے  اور کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں پریس آزاد نہیں ہے ۔

کے پی آئی کے مطابق   عالمی کشمیر آگاہی فورم نے عالمی پریس فریڈم ڈے  کے موقع پر ایک بیان میں کہا کہ ہندوستانی حکومت جموں وکشمیر میں اپنی مخالف آوازوں، صحافیوں اور عام شہریوں کی آواز دبا رہی ہے  اس کے لیے انٹرنیٹ بلیک آؤٹ ، پولیس چھاپوں اور دھمکیوں کے حربے استعمال کیے جاتے ہیں ۔

بھارتی  حکومت کے ان  اقدامات کی مذمت کرتے ہوئے ، فورم نے کہا کہ جموں وکشمیر  میں ماورائے عدالت قتل ، تشدد ، گمشدگیوں ،  اور خواتین کی بے حرمتی کے واقعات کو سامنے لایا جانا چاہئے اور  ذمہ داروں کا محاسبہ کیا جانا چاہئے۔

عالمی کشمیر آگاہی فورم  کے مطابق ، قابل اعتماد معلومات تک رسائی 13 ملین سے زیادہ کشمیریوں کی زندگی یا موت کا معاملہ ہے ، جموں وکشمیر میں سنسر شپ ہے۔ عالمی برادری کشمیریوں کے انسانی حقوق اور اظہار رائے کی آزادی کے دفاع کے لئے متحد ہو جائے