تین مئی یومِ عزم


تحریر: طارق عثمانی


3 – مئی کو پاکستان سمیت پوری دنیا میں عوام کی بہتری، فلاح اور بہبود کے لیے معلومات تک رسائی کے طور پر “آزادئ صحافت کا عالمی دن” منایا گیا۔اس دن کو منانے کا مقصد جہاں آزادئ صحافت کی اہمیت، افادیت اور صحافتی ذمہ داریوں پر روشنی ڈالنا ہے وہاں اس عزم کو یقینی بنانا بھی ہے کہ آزادئ صحافت کی راہ میں حائل کسی بھی رکاوٹ کو برداشت نہیں کیا جائے گا۔ پاکستان سمیت دنیا بھر میں صحافتی تنظیمیں اپنے کارکنوں کے حقوق اور اظہارِ رائے کی آزادی کا مطالبہ کرتے ہیں اور اپنے بنیادی حقوق کے لیے جدو جہد کا عزم کرتے ہیں۔ میں خود پچھلے 33 سالوں سے پاکستان فیڈرل یونین آف جرنلسٹس (پی ایف یو جے) جس کی بنیاد جناب منہاج برنا اور جناب نثار عثمانی نے رکھی تھی کا سرگرم کارکن ہوں اور ہمیشہ سے ہی اظہارِ رائے کی آزادی، میڈیا پر غیر قانونی سینسرشپ کے خلاف اور صحافتی کارکنوں کے حقوق کی جدو جہد میں پیش پیش رہا ہوں۔

(تنظیمی امور میں گروہ بندیوں ، نظریات پر مفادات کا حاوی ہونا ، صحافتی ٹریڈ یونین سے یونین کو نکال کر ٹریڈ کرنے والے کردار میرا آج کا موضوع نہیں یہ ہر کارکن کی دکھ بھری داستان ہے یہ پوری کتاب ہے )

اس کے باوجود میرے لیے یہ بات کسی حد تک اطمینان بخش ہے کہ میں پہلے دن سے آج تک جس صحافتی تنظیم کا حصہ ہوں اس کے سیکرٹری جنرل ناصر زیدی جو کچھ دنوں سے اپنی پوری فیملی سمیت کورونا جیسے وبائی مرض میں مبتلا ہیں لیکن اس کے باوجود انھوں نے آج کے دن کے حوالے سے جو تنظیمی اعلامیہ مجھے بھجوایا ہے اس میں انھوں نے ہر حال میں آزادئ صحافت اور صحافتی کارکنوں کی حالت زار بدلنے کا جس طریقے سے اپنے عزم کا اظہار کیا ہے وہ قابلِ ستائش ہے۔ بیماری کی حالت میں انھوں نے تنظیمی سطح پر اس عزم کو دہرایا ہے کہ ان کی تنظیم کسی بھی حالت میں عوام تک آزاد اور غیر جانبدار معلومات میں رکاوٹ بننے والے کسی حکومتی ہتھکنڈے کو کسی بھی صورت نہ ہی برداشت کرتی ہے اور نہ ہی ایسا ہونے دیں گے۔ تنظیمی اعلامیہ میں میڈیا صنعت سے وابستہ ہزاروں کارکنوں کی بے روزگاری اور تنگ حالات کار پر مطالبہ کیا گیا ہے کہ حکومت سمیت تمام سٹیک ہولڈرز اپنے قول و فعل کے رویوں میں تبدیلی لاکر پاکستان میں بسنے والے کروڑوں شہریوں کو حقیقی اظہار رائے کی آزادئ دیں جو کہ اس ملک کے عوام کا آئینی اور بنیادی حق ہے۔ یہ وہی ناصر زیدی ہیں جنھیں ضیاء الحق کے مارشل لاء کے دور میں 13 مئی 1978 کو دیگر ساتھیوں بشمول مسعود اللہ خاں، خاور نعیم ہاشمی اور اقبال جعفری کے ساتھ فوجی عدالت سے کوڑوں کی سزا دی گئی۔ پاکستان فیڈرل یونین آف جرنلسٹس (پی ایف یو جے) آمریت کے خلاف جدو جہد کرنے کی پاداش میں فوجی عدالتوں کے ذریعے سزائیں بھگتنے اور کوڑے کھانے والے ان صحافیوں کی قربانیوں اور جدو جہد کی یاد میں ہرسال 13 مئی کو “یومِ عزم” منا کر اس بات کا اعادہ کرتی ہے کہ منہاج برنا اور نثار عثمانی کے فالوورز آزادئ صحافت کے لیے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے اور آزادئ اظہار کی جدو جہد کو ہر حال میں جاری رکھیں گے۔ جناب ناصر زیدی شدید علیل ہیں اور ان کی پوری فیملی اس وقت کووڈ-19 جیسے وبائی مرض میں مبتلا ہے اور بستر علالت سے ان کا اظہارِ رائے کی جدو جہد کا اعلان ہم سب کے لیے حوصلہ مند ہے۔اللہ تعالیٰ انھیں اور ان کی فیملی کو جلد از جلد صحت یاب فرمائے – (آمین)