پانچ سال میں اربوں کی چینی خرید کر فروخت کرنے کے انکشافات


لاہور: پاکستان میں شوگر مافیا کے بے نقاب ہونے اور سٹہ بازوں کی جانب سے ہوشر با انکشافات کا سلسلہ مسلسل جاری ہے۔

موقر قومی اخبار کی رپورٹ کے مطابق شوگر سٹہ باز شیخ منظور عرف حاجی ہیرا سمندری والے نے تہلکہ خیز انکشاف کئے ہیں۔ اپنے بیان میں انہوں نے بتایاکہ اس کی سال 2007 سے 2015 تک چینی کی دکان تھی،2015 سے چینی کی بروکری شروع کی ۔

 حاجی ہیرا نے شوگر سٹہ کے 16 واٹس گروپس میں سے 4 گروپس کا ممبر ہونے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ ان واٹس گروپس کے ذریعے چینی سٹہ جیسے مکروہ کاروبار میں ملوث رہا جس پر ندامت ہے ۔

حاجی ہیرا نے بتایا کہ شوگر بروکر زمحمو د بھلی ، اسلم بھلی ، مشتاق پراچہ اور عاطف پراچہ سے چینی خرید تا ۔ 5 سالوں میں 13.5 ارب روپے کی چینی کی خرید و فروخت کی ،دوران تحقیقات جے ڈی ڈبلیو گروپ ، حمزہ شوگر (طیب گروپ)، سویرا گروپ ، المیعز شوگر ملزکے کے سٹہ کے مکروہ کاروبار میں ملوث ہونے کا انکشاف ہوا ہے ۔

تما م شوگر ملز تقریباً کم سے کم ایک ماہ چینی کی بکنگ کرتی ہیں ،شوگر کی قیمتوں میں فی بوری 200سے 250روپے اضافہ ہوتا ہے۔

یاد رہے کہ شوگر سکینڈل کیس میں پی ٹی آئی کے اہم رہنما جہانگیرترین کو ایف آئی اے نے 9اپریل کو طلب کررکھا ہے۔