لاپتہ افرادکے مقدمات نمٹانے میں تیزی آگئی،فروری میں ایک لاش برآمد

انٹرنیٹ فوٹو

اسلام آباد(عابدعلی آرائیں) لاپتہ افراد کے مقدمات سننے والے کمیشن نے تیزی سے لاپتہ افراد کے لواحقین کی درخواستیں تیزی سے نمٹانے کا عمل شروع کردیا۔ رواں سال جنوری میں صرف 14مقدمات نمٹائے جاسکے تھے جبکہ فروری میں144مقدمات نمٹادیئے گئے ہیں۔

لاپتہ افراد کی بازیابی کیلئے قائم کمیشن نے رواں سال 2021کے دوسرے ماہ فروری میں154لاپتہ افراد کے مقدمات نمٹائے ہیں جبکہ ایک لاپتہ شہری کی لاش بھی ملی ہے ۔

صباح نیوز کودستیاب دستاویزات کے مطابق 13مارچ 2011کو قائم ہونے والے کمیشن نے تقریبا دس سال میں دائر ہونے والے کل7088مقدمات میں سے 4976 لاپتہ افراد کے مقدمات نمٹائے ہیں اوراس وقت کمیشن کے پاس 2112مقدمات زیرسماعت ہیں۔ کمیشن کوفروری میں  144 نئے لاپتہ افراد کے لواحقین نے درخواستیں دی ہیں۔

فرور ی میں نمٹائے گئے 144مقدمات میں سے 139لاپتہ افرادکو ٹریس کیاگیاجن میں سے 132 خودگھروں کو لوٹ آئے ،4 حراستی مرکزجبکہ دوافراد کی جیلوں میں موجودگی جبکہ ایک لاپتہ شہری کی لاش ملی ہے جس کے بعد اب تک ملنے والی لاشوں کی تعداد222ہوگئی ہے۔

یاد رہے کہ رواں سال کے پہلے مہینے جنوری میں بھی ایک لاپتہ شہری کی لاش ملی تھی۔

یہ بھی پڑھیں:لاپتہ افراد کمیشن،جنوری میں 18 افراد ٹریس ،ایک لاش برآمد

دستاویزات کے مطابق فروری کے دوران 15 مقدمات ایسے ہیں جو لاپتہ افراد کے ذمرے میں نہیں آتے تھے اس لئے نمٹا دیئے گئے ہیں۔

فروری میں لاپتہ افراد کے کمیشن کے چیئرمین اور ارکان نے 504سماعتیں کی ہیں جن میں سے اسلام آباد میں 192کوئٹہ میں255اورکراچی میں57سماعتیں کی گئی ہیں۔

یاد رہے کہ چیئر مین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال اس کمیشن کے چیئر مین ہیں جبکہ جسٹس (ر)ڈاکٹرغوث محمد اور سابق آئی جی محمد شریف ارکان میں شامل ہیں جو اسلام آباد اور دیگر صوبائی دارالحکومتوں میں جا کر درخواستوں کی سماعت کرتے ہیں۔