لیاقت خٹک کا سینیٹ الیکشن میں پارٹی امیدوارکو ووٹ دینے کا اعلان


پشاور:تحریک انصاف کے ناراض ایم پی اے وزیر لیاقت خٹک نے سینیٹ الیکشن میں پارٹی امیدوار کو ووٹ دینے کا اعلان کردیا۔ ایک انٹرویو میں انھوں نے  کہا ہے کہ وزیراعظم عمران خان سمیت کسی نے تاحال سینیٹ الیکشن کے حوالے  رابطہ نہیں کیا۔ تاہم  سینیٹ  الیکشن میں ووٹ اپنی پارٹی کو دینے اور پارٹی ڈسپلن کا پابند ہوں ۔انھوں نے کہا کہ تحریک انصاف کے علاوہ کسی دوسری پارٹی کو ووٹ دینے کا سوچ بھی نہیں سکتا۔

نجی ٹی وی کے پروگرام میں  مزیداظہار خیال کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ گزشتہ دو  ڈھائی سال سے نوشہرہ کے ناظمین ، تحصیل و ضلعی ممبران کونسلروں اور پارٹی  ورکروں کو نظر انداز کیا گیا  ان پر کوئی توجہ نہیں دی گئی۔ میں نے بار بار اس کی نشاندہی کی کہ ان کے  مسائل سنے جائیں۔بدقسمتی سے پارٹی میں سے کسی نے ان کے مسائل  پر توجہ نہیں دی یہاں تک کہ گزشتہ7,8  ماہ سے میری وزارت  میں مداخلت کی گئی۔ مجھے کام نہیں کرنے دیا گیا۔ یہ بات میں نے تحریری طورپر وزیراعلیٰ کے نوٹس میں لائی مگر مجھے کوئی جواب نہ ملا۔

میں نے کوشش کی کہ میڈیا کے ذریعے عمران خان سے  رابطہ کروں کہ وہ مجھے وقت دیں تاکہ میں انہیں بتا سکوں کہ ہمارے صوبے خاص کر ہمارے ضلع میں اپنے ہی ورکروں کے ساتھ انتقامی کارروائی ہورہی ہے۔ پارٹی و رکروں کو نظر انداز کیے جانے پر پارٹی کو شکست ہوئی۔لیاقت خٹک نے کہاکہ آج تک نہ مجھ سے رابطہ کیا گیا اور نہ ہی کوئی نوٹس دیا گیا ۔ انہوں نے کہاکہ نوشہرہ کے ضمنی انتخاب تو اب ہوئے ہیں جبکہ میرے تحفظات گزشتہ 7 ماہ سے تھے ۔ انہوں نے کہاکہ سینیٹ الیکشن کیلئے ابیھ تک مجھ سے کسی نے رابطہ  نہیں کیا ۔ شاید ان کو میری ضرورت ہی نہیں ۔ تاہم اگر سینیٹ الیکشن میں ووٹ ڈالا تو  اپنی پارٹی کو ہی ڈالوں گا کیونکہ ہم پارٹی  ڈسپلن کے پابند ہیں۔