شہید غلام رسول ڈار نے ہزاروں کشمیری مجاہدین کی نظریاتی،عسکری تربیت کی تھی، صلاح الدین

انٹرنیٹ فوٹو

مظفر آباد: حزب المجاہدین کے سربراہ اور متحدہ جہاد کو نسل کے چیئرمین سید صلاح الدین نے کہا ہے کہ شہید غلام رسول ڈار اور اس کے ساتھیوں نے عزیمت کی راہ پر چل کر ،باطل کے خلاف مزاحمت کا طریقہ کار سمجھاکر ،ابدی زندگی کو عارضی زندگی پر ترجیح دی۔

ان خیالات کا اظہار سید صلاح الدین نے شہید ڈار کی سترھویں برسی پر ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ غلام رسول ڈار المعروف غازی نصیر الدین 2004میں آج ہی کے روز بھارتی فورسز کے ہاتھوں اپنے دو اور ساتھیوں کمانڈر عباس راہی اور کمانڈر عابد حسین کے ساتھ شہادت کے مرتبے پر فائز ہوئے۔وہ اس وقت حزب آپریشنل چیف کی حیثیت سے ذمہ داریاں انجام دے رہے تھے۔

سید صلاح الدین نے کہا کہ تینوں رہنماوں نے بھارتی طاقت کے خلاف شہادت سے پہلے تک ہزاروں مجاہدین کی نظریاتی اور عسکری تربیت کی تھی اور یہ اسی جدوجہد و تربیت کا ثمر ہے کہ قلیل تعداد میں ہونے کے باوجود اس وقت بھی کشمیری مجاہدین ،آزادی اور غلبہ اسلام کی جدوجہد میں مصروف ہیں ۔

حزب سربراہ نے اپنے خطاب میں شاعر اسلام ،مشتاق کشمیری کی بیٹی اور معروف کشمیری قانون دان ایڈوکیٹ اویس احمد کی زوجہ کے انتقال پر بھی رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مرحومہ انتہائی پارسا اور تحریک آزادی کشمیر کی متوالی تھی ۔ان کے والد شاعر اسلام مشتاق کشمیری قربانیوں کا ایک مجسمہ ہیں ۔وہ خود عمر بھر باطل کے عذاب و عتاب کا شکار رہے ہیں اور رواں تحریک آزادی کے دوران ان کے ایک فرزند احمد دشمنان اسلام کے ہاتھوں شہید اور بیٹی زخمی ہوئی ہیں ۔

انہوں نے مرحومہ کی جنت نشینی اور پسماندگان کیلئے صبر جمیل کی دعا بھی کی ۔تقریب کے اختتام پر شہید غلام رسول ڈار ، کمانڈر عباس راہی ،کمانڈر عابد حسین اور دیگر شہداء و مرحومین کی بلندی درجات کیلئے دعا بھی کی گئی۔