بھارت ڈبلیو ایچ او سے کشمیر بارے جھوٹے دعوے کو تسلیم کرانے میں ناکام ہو گیا


جنیوا:بھارت عالمی ادارہ صحت(ڈبلیو ایچ او)میں جموں وکشمیر بارے اپنے جھوٹے دعوے کو تسلیم کرانے میں ناکام ہو گیا ہے ۔لداخ سمیت جموں و کشمیر کو بھارتی علاقہ تسلیم نہ کرنے پر بھارت نے  ڈبلیو ایچ او سے احتجاج کیا ہے ۔

عالمی ادارہ صحت(ڈبلیو ایچ او)نے جموں وکشمیر کو بھارتی حصہ تسلیم کرنے سے انکار  کرتے ہوئے لداخ سمیت جموں و کشمیر کو ہندوستان کے نقشے میں شامل نہیں کیا بلکہ جموں و کشمیر کو اپنے نقشے میں الگ سے ظاہر کیا گیا ہے۔

کے پی آئی  کے مطابق جنیوا میں اقوام متحدہ میں ہندوستان کے سفیر اندرمانی پانڈے نے ڈبلیو ایچ او کے ڈائریکٹر جنرل ٹیڈروس اذانوم گریبیسس کے ساتھ یہ مسئلہ اٹھایا ہے۔ تاہم  ڈبلیو ایچ او نے اپنا نقشہ تبدیل کرنے کی کوئی یقین دھانی نہیں کرائی

مزید پڑھیں مقبوضہ کشمیر میں 18 ماہ کے دوران حراست یا جعلی مقابلوں میں36 کشمیری نوجوان شہید

بھارتی اخبار کے مطابق پانڈے نے ڈبلیو ایچ او کے اس اقدام پر سخت ناراضگی کا اظہار کیا ہے اور نقشہ جات کو ہٹانے کے لئے فوری مداخلت کا مطالبہ کیا ہے۔ایک ماہ میں یہ تیسرا موقع ہے جب بھارت نے ڈبلیو ایچ او کے ساتھ یہ مسئلہ اٹھایا ہے۔بھارتی حکومت نے 5 اگست2019 کو مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کے قانون دفعہ370 ختم کرکے جموں و کشمیر کو دو الگ الگ یونین ٹیریٹریز قرار دیا تھا۔ بھارتی نقشے میں بھی ان دونوں جموں وکشمیر اور لداخ  یونین ٹیریٹریز کو شامل کیا گیا تھا۔

عالمی ادارہ صحت( ڈبلیو ایچ او) نے اپنے نقشے میں بھارت کے اس اقدام کو  تسلیم نہیں کیا اورجموں وکشمیر کو الگ سے دکھا  یا ہے ۔عالمی ادارہ صحت نے اپنی ویب سائٹ پر شائع کردہ رنگین کوڈ والے عالمی نقشے میں ہندوستان کو نیلے رنگ میں دکھایا ہے ، جبکہ لداخ سمیت جموں و کشمیر کو بھورے رنگ کے ساتھ الگ شناخت  دی ہے